Wednesday , December 12 2018

الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں دھاندلیاں

گجرات میں ای وی ایم مشینوں کی منصفانہ قانونی جانچ ہو:کانگریس
نئی دہلی،23نومبر(یواین آئی)کانگریس نے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) میں گڑبڑی کی کچھ نئی شکایتوں کے پیش نظر الیکشن کمیشن سے شبہ کی صورتحال کو ختم کرنے کے لئے گجرات میں ای وی ایم مشینوں کی جانچ سپریم کورٹ کے جج سے منصفانہ طورپر کرانے کا آج مطالبہ کیا۔ کانگریس کے ترجمان ابھیشیک منو سنگھوی نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ اترپردیش اور مہاراشٹر سمیت کچھ دیگر علاقوں میں حال ہی میں ای وی ایم مشینوں میں گڑبڑی کی شکایت ملی ہیں۔شکایت کے بعد ان میں کچھ مشینوں کی جانچ کرنے پر پتہ چلا ہے کہ بٹن کسی بھی پارٹی کے انتخابی نشان پر دباؤلیکن ووٹ بھارتیہ جنتا پارٹی کے انتخابی نشان ‘کمل’کو ہی جارہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو گجرات میں ہونے والے اسمبلی انتخابات میں اس شبہ کو دور کرنے کے لئے وہاں استعمال ہونے والی ووٹنگ مشینوں کی جانچ سپریم کورٹ کے جج یا ریٹائرڈ جج سے منصفانہ طورپر کرانی چاہئے ۔اس سے لوگوں کا ای وی ایم پر اعتماد بڑھے گا اور منصفانہ اور آزاد انتخابات کے سلسلے میں بھروسہ قائم رہے گا۔ترجمان نے کہا کہ گجرات میں اگر ای وی ایم مشینوں کے صحیح ہونے کی منصفانہ عدالتی جانچ ہوتی ہے تو یہ پورے ملک کے لئے ایک پائلٹ پروجیکٹ کے طورپر کام کرے گا اور سبھی مقامات پر لوگوں کا ای وی ایم پر بھروسہ قائم رہے گا۔انہوں نے کہا کہ وی وی پیٹ کا انتظام کانگریس کے مطالبہ پر ضرور نافذ کیا گیا ہے لیکن ای وی ایم کو اور زیادہ منصفانہ اور شفاف بنانے کے لئے اس کی جانچ ہونی چاہئے ۔واضح رہے کہ آج میرٹھ میں منعقدہ بلدی انتخابات کے دوران کسی بھی بٹن پر انگلی دبانے سے بی جے پی کو ووٹ جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT