Wednesday , December 19 2018

امتیازی نشان کیلئے طلبہ کو محنت کرنے پر زور

ظہیرآباد /27 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) نو قائم کردہ گورنمنٹ ویمنس ڈگری کالج ظہیرآباد میں تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز ہوچکا ہے ۔ اس خصوص میں منعقدہ ایک تقریب کے شرکاء کو مخاطب کرتے ہوئے پرنسپل ڈاکٹر کے سرینواس راجو نے کہا کہ امتیازی نشانات کے ساتھ کامیابی طلباء کا نصب العین ہونا چاہئے اور یہ تب ہی ممکن ہے جب طلباء سخت محنت و جستجو کو اپنا

ظہیرآباد /27 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) نو قائم کردہ گورنمنٹ ویمنس ڈگری کالج ظہیرآباد میں تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز ہوچکا ہے ۔ اس خصوص میں منعقدہ ایک تقریب کے شرکاء کو مخاطب کرتے ہوئے پرنسپل ڈاکٹر کے سرینواس راجو نے کہا کہ امتیازی نشانات کے ساتھ کامیابی طلباء کا نصب العین ہونا چاہئے اور یہ تب ہی ممکن ہے جب طلباء سخت محنت و جستجو کو اپنا شعار بنالیں ۔ انہوں نے پہلے بیاچ میں داخلہ لینے والے تمام طلباء کو مبارکباد دی اور پابندی کے ساتھ کالج آنے پر زور دیا ۔ انہوں نے اعزازی خدمات انجام دینے والے لکچرراس کی بھی ستائش کی ۔ صدر شعبہ اردو محترمہ عائشہ نے مستقر ظہیرآباد میں ویمنس ڈگری کالج کے قیام کو ایک تاریخی کارنامہ قرار دیا اور کہاکہ اس کارنامہ کو انجام دینے والے تمام سیاسی و غیر سیاسی قائدین مبارکبادی کے مستحق ہیں ۔ انہوں نے مذکورہ کالج کیلئے درکار لکچررس کی جائیدادیں منظور کروانے کی شدید ضرورت ظاہر کی ۔ آفس انچارج جناب محمد افتخار نے ویمنس کالج کیلئے دو گروپس منظور کئے جانے کا تذکرہ کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ بی زیڈ سی گروپ کیلئے مختص 30نشستوں کو میرٹ کی اساجس پر پُر کیا گیا ۔ جبکہ ایم پی سی گروپ میں داخلے کیلئے کوئی بھی درخواست وصول نہ ہونے کے سبب جاریہ تعلیمی سال سے اس گروپ میں تعلیم کا آغاز ممکن نہ ہوسکا ۔ انہوں نے آئندہ تلعیمی سال سے دونوں گروپ میں تعلیم کے آغاز ہونے کی قوی امید ظاہر کی ۔ دیگر لکچررس مسرز محمد واجد علی ، محمد نعیم الدین ، رخسانہ بیگم ، عشرت فاطمہ ، محمد جمیل الدین ، عرشیہ خانم اور دوسروں نے بھی مخاطب کیا ۔ آفس انچارج جناب محمد افتخار کے شکریہ پر تقریب کا اختتام عمل میں آیا ۔ اس موقع پر طلباء کی قابل لحاظ تعداد موجود تھی ۔

TOPPOPULARRECENT