Friday , December 15 2017
Home / دنیا / امریکہ اور شمالی کوریا کی لفظی جنگ جاری

امریکہ اور شمالی کوریا کی لفظی جنگ جاری

ہانگ کانگ25ستمبر (سیاست ڈاٹ کام ) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے شمالی کوریا کے وزیر خارجہ کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تلخ تقریر کے بعد اسے نیا انتباہ دیا ہے ۔شمالی کوریا کے وزیر خارجہ ری یونگ ہو نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب میں کہا، کہ مسٹر ٹرمپ ذہنی طور پر بوکھلاہٹ کے شکار ہیں اور ان پر طاقتور ہونے کا خبط سوار ہے ، جو خودکشی کے راستے پر ہیں۔مسٹر ٹرمپ نے جوابی حملہ کرتے ہوئے کہا کہ شمالی کوریا کے وزیر خارجہ ‘لٹل راکٹ مین’کی طرح ہی باتیں کریں گے تو کم جونگ اون اور وہ طویل عرصے تک بچ نہیں پائیں گے ۔شمالی کوریا کے وزیر خارجہ ری یونگ کے خطاب سے ذرا پہلے پینٹاگون نے کہا تھا کہ اس کے جنگی جہازوں نے شمالی اور جنوبی کوریا کی سرحد سے کافی دور شمال میں پرازیں کی ہیں۔پینٹاگون کے بیان میں کہا گیا کہ یہ مشن امریکی ارادے کا ثبوت ہے اور واضح پیغام ہے کہ صدر( ٹرمپ) کے پاس کسی بھی خطرے سے نمٹنے کے لیے متعدد فوجی راستے موجود ہیں۔ہم امریکی سرزمین اور اپنے اتحادیوں کے دفاع کے لیے تمام فوجی صلاحیتوں کو استعمال کرنے کے لیے تیار ہیں۔ادھر شمالی کوریا کے وزیرِ خارجہ ری یونگ ہو نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ’خودکش مشن‘ پر ہیں۔شمالی کوریا کے وزیرِ خارجہ ری یونگ ہو نے کہا ہے کہ مسٹر ٹرمپ کو اپنی تقریر کی قیمت چکانا ہو گی جس میں انھوں نے کہا تھا کہ امریکہ یا اس کے اتحادیوں کو دفاع کرنے کی ضرورت پیش آئی تو وہ شمالی کوریا کو مکمل طور پر تباہ کر دیں گے ۔قبل ازیں شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن نے کہا تھا کہ ‘بوکھلاہت کے شکار’ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے بیان کے بعد انھیں یقین ہو گیا ہے کہ وہ شمالی کوریا کے لیے ہتھیار بنانے کے معاملے میں صحیح ہیں۔واضح رہے کہ امریکی ایئر فورس کے بی -1 بی لانسر بامر اور فائٹر ہفتہ کو شمالی کوریا کے مشرقی ساحل کے اوپر بین الاقوامی ہوائی فضائی خطہ سے گزرے ۔ یہ ہوائی گشت شمالی کوریا کے نیوکلیائی مقام پر زلزلہ کے ہلکے جھٹکے محسوس کیے جانے کے بعد کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT