Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / امریکہ: سمندری طوفان ’فلورنس‘ بڑے پیمانے پر تباہی، پانچ ہلاک

امریکہ: سمندری طوفان ’فلورنس‘ بڑے پیمانے پر تباہی، پانچ ہلاک

ولمنگٹن (امریکہ) ، 15 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سمندری طوفان ’فلورنس‘ ہفتہ کو کیرولائنا کے علاقوں میں بڑے تباہ کن سیلاب کا سبب ہوا، حالانکہ وہ کمزور ہونا شروع ہوچلا ہے، لیکن اس سے کئی اموات ہوگئیں۔ عہدے داروں نے چار ہلاکتوں کی توثیق کی ہے جبکہ امریکی میڈیا نے پانچویں ہلاکت کی رپورٹ بھی دی ہے۔ طوفان نے تباہی مچائی، کئی امریکی ریاستوں میں سیلابی بارش ہوئی اور دریائیں اپنے پشتوں سے اُبلنے لگیں۔ ’فلورنس‘ نے امریکہ کے مشرقی ساحل پر بڑے پیمانے پر تباہی پھیلا دی ہے اور اب تک ہلاکتوں کے علاوہ لاکھوں مکانات بجلی سے محروم ہو گئے ہیں۔ طوفان کی شدت کم ضرور ہو گئی ہے لیکن ماہرین موسمیات کے مطابق اس کی ہلاکت خیز قوت اب بھی برقرار ہے۔ طوفان کو زائل ہونے میں ابھی کئی دن لگ سکتے ہیں اور اس دوران 110 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چلنے کا خدشہ ہے۔ اب تک اس کے راستے میں آنے والے علاقے میں سے 17 لاکھ لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا گیا ہے۔ سمندری طوفان کے باعث کئی عمارتیں تباہ ہو گئی ہیں جبکہ اس کی وجہ سے بڑے علاقے میں طوفانی ہواؤں، موسلادھار بارشوں اور خطرناک سیلابوں کا خدشہ درپیش ہے۔ شمالی کیرولائنا میں ایک مکان پر درخت گرنے سے ماں اور بچہ ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ اس بچے کے والد کو زخمی حالت میں اسپتال پہنچایا گیا ہے۔ ’فلورنس‘ کا مرکز ریاست شمالی کیرولائنا کے علاقے رائٹس ول بیچ میں ڈیڑھ سو کلومیٹر کی ہواؤں کے ساتھ داخل ہوا۔ طوفان کے بیرونی حصوں نے پہلے ہی ساحلی علاقوں کو شرابور کر دیا ہے۔ نیو برن شہر میں بیسیوں لوگ امداد کے منتظر ہیں۔ دس لاکھ سے زیادہ لوگوں کو علاقہ چھوڑ کر جانے کی ہدایت کی گئی ہے۔ شمالی کیرولائنا کے گورنر رائے کوپر نے کہا: ’’طوفان کے ابتدائی حصے پہلے ہی ہم تک پہنچ گئے ہیں لیکن ابھی اس کے کئی دن باقی ہیں۔‘‘ امریکہ کے قومی موسمیاتی ادارے نے پیش قیاسی کی ہے کہ شمالی کیرولائنا میں صرف دو سے تین دنوں میں اتنی بارش متوقع ہے جو آٹھ مہینوں میں ہوا کرتی ہے۔ شمالی کیرولائنا کے گورنر کوپر نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ 400 میل کی رفتار سے آنے والا یہ طوفان پورے علاقے کو بہا کر لے جا سکتا ہے۔ ریاست کے ٹرانسپورٹیشن کے وزیر جیمز ٹروگڈان نے کہا ہے کہ ایک ایسے سیلاب کا خطرہ ہے جو ہزار سال میں ایک بار آتا ہے۔ نیشنل ہریکین سنٹر کے مطابق طوفان کی شدت میں کمی واقع ہو رہی ہے لیکن پھر بھی طوفان شدید بارشوں کی وجہ سے بیحد خطرناک ہے۔ علاقے کے پٹرول پمپ بھی پٹرول کی قلت کا شکار ہو گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT