Friday , November 24 2017
Home / دنیا / امریکہ میں دہشت گردانہ حملے غیرمسلموں کی کارستانی

امریکہ میں دہشت گردانہ حملے غیرمسلموں کی کارستانی

ایف بی آئی کا تحقیقاتی تاثر ۔ امریکی نیوز پورٹل کی رپورٹ
واشنگٹن ، 26 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) دنیا بھر میں جہاں کہیں کوئی دہشت گردانہ حملہ پیش آئے تو ہر بار مسلمانوں کو موردِ الزام ٹھہرایا جاتا ہے۔ امریکی سرزمین پر 9/11 حملوں کے بعد سے دہشت گردی کو راست طور پر مسلمانوں اور اسلام سے جوڑ دیا گیا ہے۔ 13 نومبر کے پیرس حملوں اور کیلی فورنیا میں سان برنارڈینو شوٹنگ واقعہ کے بعد مسلمانوں کے خلاف ہٹ دھرمی، نفرت، امتیاز اور تشدد خطرناک سطح تک بڑھ چکے ہیں۔ تاہم ایف بی آئی (فیڈرل بیورو آف انوسٹی گیشن) کے مطابق امریکی سرزمین پر مسلمانوں کے مقابل لاطینیوں اور یہودیوں کی کارستانی والے زیادہ دہشت گردانہ واقعات درج ہوئے ہیں۔ علاوہ ازیں یورپ گزشتہ پانچ برسوں میں زائد از 1000 دہشت گردانہ حملے بھگت چکا ہے، جن میں 2 فیصدی سے کم مجرمین مسلم رہے ہیں، یہ بات خود امریکی آن لائین نیوز پورٹل ’ہفنگٹن پوسٹ‘ نے اپنی رپورٹ میں بیان کی ہے۔ یونیورسٹی آف نارتھ کیرولینا کے تحقیقی جائزہ ’’2013ء میں مسلم۔ امریکی دہشت گردی‘‘ کے مطابق 11 ستمبر 2001ء سے ہلاک کئے گئے امریکیوں میں سے محض 0.0002 فیصد حصہ کیلئے مسلم افراد ذمہ دار رہے ہیں۔ اسی جائزہ میں نشاندہی کی گئی کہ 2013ء میں امریکہ میں لگ بھگ 14,000 قتل ہوئے۔ 9/11 کے بعد سے مسلم ۔ امریکی دہشت گردی نے امریکہ میں 37 افراد کی جان لی، جبکہ اس مدت کے دوران زائد از 190,000 افراد قتل ہوئے ۔

TOPPOPULARRECENT