Saturday , November 25 2017
Home / دنیا / امریکہ میں غیرقانونی طور پر مقیم ہندوستانی طلباء کیخلاف اسٹنگ آپریشن

امریکہ میں غیرقانونی طور پر مقیم ہندوستانی طلباء کیخلاف اسٹنگ آپریشن

300 گرفتار، طلباء قانونی طور پر امریکہ آتے ہیں لیکن غیرقانونی تنظیموں کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں : مارک ٹونر
واشنگٹن ۔ 12 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ایک اعلیٰ سطحی عہدیدار کے مطابق امریکہ ایسے زائد از 300 ہندوستانی طلباء کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرے گا جنہیں ایک اسٹنگ آپریشن کے دوران امریکہ میں اپنے قیام کو غیرقانونی طور پر توسیع دینے کا مرتکب پایا گیا تھا۔ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے نائب ترجمان مارک ٹونر نے بتایا کہ تمام طلباء یوں تو اسٹوڈنٹ ویزا پر قانونی طور پرامریکہ آئے تھے تاہم میرا خیال یہ ہیکہ جب ایک بار انہیں امریکہ کا چسکہ لگ گیا تو انہوں نے امریکہ میں اپنے قیام کو غیرقانونی طور پر توسیع دینے کی کوشش کی۔ ایسے طلباء کی جملہ تعداد 306 ہے جنہیں ایک اسٹنگ آپریشن کے دوران حراست میں لیا گیا جو ڈپارٹمنٹ آف ہوم لینڈ سیکوریٹی اینڈ امیگریشن اینڈ کسٹم انفورسمنٹ کی جانب سے کیا گیا تھا۔ اسی اسٹنگ آپریشن کا نتیجہ ہے کہ کم و بیش 21 دلال اور درمیانی اشخاص جن میں 11 افراد ہندوستانی نژاد ہیں، کو گرفتار کیا گیا۔ مارک ٹونر نے البتہ وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ صرف ایسے طلباء جنہوں نے غیرقانونی طور پر امریکہ میں اپنے قیام کو توسیع دینے کی کوشش کی، ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی جبکہ بے قصور طلباء کو ہراساں نہیں کیا جائے گا۔

مارک ٹونر نے ایک بار پھر کہا کہ طلباء یا تو اسٹوڈنٹ ویزہ یا پھر کام کرنے کیلئے قانونی طور پر امریکہ آتے ہیں۔ تعلیمی مقاصد کیلئے آنے والے طلباء کی کافی جانچ پڑتال کی جاتی ہے اور انہیں جب ویزہ کا اہل قرار دیا جاتا ہے، اسی صورت میں ویزہ جاری کیا جاتا ہے کیونکہ وہ ویزے کیلئے درکار تمام اہلیتوں کے حامل ہوتے ہیں۔ ایک بار یہاں آنے کے بعد یونیورسٹی میں پڑھائی کے بعد انہیں یہ خیال آتا ہیکہ وہ اپنے ویزہ کی مدت میں توسیع کریں اور اس طرح وہ غیرقانونی طور پر کام کرنے والی تنظیموں کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں۔ مسٹر ٹونر نے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستانی طلباء کو ہندوستان میں کام کررہے امریکی سفارتی مشن سے ویزے جاری کئے جاتے ہیں تاکہ وہ مسلمہ اور معروف یونیورسٹیوں میں تعلیم حاصل کرسکیں۔ تاہم جعلی یونیورسٹیوں کے بھی بیشتر معاملات سامنے آ چکے ہیں جہاں کئی ہندوستانی طلباء کو امریکہ سے واپس ہندوستان بھیج دیا گیا تھا۔ ہندوستانی طلباء کو چاہئے کہ وہ یونیورسٹیوں میں داخلہ سے قبل یونیورسٹیوں کی افادیت کی اچھی طرح جانچ پڑتال کرلیں۔ بات صرف ویزہ اور قیام کی نہیں ہے۔ طلباء کی اکثریت قانونی طور پر ہی امریکہ پہنچتی ہے لیکن بعد میں ایسا ہوتا ہے کہ وہ امریکہ میں  اپنے قیام کو توسیع دینے کیلئے غلط راستہ اختیار کرتے ہیں۔ اسٹنگ آپریشن میں جن ہندوستانی طلباء کو گرفتار کیا گیا ہے وہ تمام امریکی یونیورسٹیوں میں داخلے کے اہل قرار دیئے گئے تھے کیونکہ ان میں وہ تمام قابلیتیں اور اہلیتیں موجود ہیں۔ یہاں آنے کے بعد وہ نہیں چاہتے کہ ان کے ویزوں کی مدت ختم ہونے کے بعد وہ امریکہ سے واپس چلے جائیں لہٰذا وہ غیرقانونی طور پر غیرقانونی تنظیموں کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT