Thursday , January 18 2018
Home / دنیا / امریکہ میں نسلی امتیاز عروج پر، ایک اور سیاہ فام کا قتل

امریکہ میں نسلی امتیاز عروج پر، ایک اور سیاہ فام کا قتل

سینٹ لوئس ۔ 25 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں نسلی امتیاز اپنے عروج پر ہے ، ریاست میسوری کے شہر سینٹ لوئس میں پولیس اہلکار نے ایک اور سیاہ فام نوجوان کو فائرنگ کر کے ہلاک کردیا ، واقعہ بروکلین کے علاقے میں گیس اسٹیشن پر پیش آیا۔ نوجوان کی ہلاکت کی اطلاع ملتے ہی سینکڑوں مظاہرین جائے وقوعہ پر جمع ہوگئے اور شہر بھر میں ہنگامے پھوٹ پڑے،

سینٹ لوئس ۔ 25 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں نسلی امتیاز اپنے عروج پر ہے ، ریاست میسوری کے شہر سینٹ لوئس میں پولیس اہلکار نے ایک اور سیاہ فام نوجوان کو فائرنگ کر کے ہلاک کردیا ، واقعہ بروکلین کے علاقے میں گیس اسٹیشن پر پیش آیا۔ نوجوان کی ہلاکت کی اطلاع ملتے ہی سینکڑوں مظاہرین جائے وقوعہ پر جمع ہوگئے اور شہر بھر میں ہنگامے پھوٹ پڑے، پولیس اور مشتعل مظاہرین کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئیں جبکہ جلائو گھیرائو اور لوٹ مار کے واقعات بھی رونما ہوئے،پولیس نے چار مظاہرین کو گرفتار کرنے کی تصدیق کردی ہے۔مشتعل افراد نے پولیس پر دیسی ساختہ بموں سے حملے کئے اور شدیدسنگباری کیا۔ مقامی پولیس کا موقف ہے کہ نوجوان مسلح تھا اور اس نے ایک افسر پر پستول تانا تھا۔مقتول کی شناخت 18 سالہ انتونیو مارٹن کے نام سے ہوئی ہے۔پولیس کے مطابق انہوں نے نوجوان کے قبضے سے پستول بھی برآمد کرلیا ہے۔ سینٹ لوئس پولیس کے سربراہ کرنل جان بلمر کا کہنا ہے کہ پولیس افسر انتونیو اور اس کے ایک اور ساتھی سے مقامی اسٹور میں ہونے والی ڈکیتی کے بارے میں پوچھ گچھ کررہے تھے نوجوان نے پستول اہلکار پر تان لیا۔اپنی زندگی کو خطرہ دیکھ کر اہلکار نے جوابی کارروائی کی جس میں یہ نوجوان مارا گیا

اور دوسرا موقع سے فرار ہوگیا۔ انہوں نے واقعے کو المیہ قرار دیا اور کہا کہ انتونیو مارٹن کی ہلاکت کی صاف وشفاف تحقیقات کی جائینگی۔ان کا کہنا تھا کہ پولیس اہلکار نے تین گولیاں چلائیں جبکہ مقتول کی جانب سے کوئی گولی فائر نہیں کی گئی تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ کسی کی ہار یا جیت کا مسئلہ نہیں۔ پولیس افسر نے مزید کہا کہ انتونیو مارٹن کا مجرمانہ ریکارڈ بھی موجود ہے اور وہ اس سے قبل بھی ڈکیتی کی وارداتوں میں مطلوب تھا۔ انہوں نے مقتول کے اہلخانہ سے اظہار ہمدردی بھی کیا۔ پولیس سربراہ نے کہا کہ آتش گیر مواد سے حملے ہماری کمیونٹی اور کاروبار کے لئے بڑا خطرہ ہیں۔ پولیس کے مطابق دیسی ساختہ بم دھماکے سے ایک پولیس افسر شدید زخمی بھی ہوا جبکہ دوسرا اہلکار سنگ باری سے زخمی ہوا جنھیں اسپتال میں داخل کروادیا گیا ہے۔ دوسری جانب سیاہ فام نوجوان کی والدہ ٹونی مارٹن نیپولیس کے بیان کی تردید کرتے ہوئے جائے وقوعہ پر میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ انتونیو اپنی گرل فرینڈ سے ملنے جارہا تھا اور وہ غیر مسلح تھا۔ انہوں نے بتایا کہ دو گھنٹے گذرنے کے باوجود بھی ان کے بیٹے کی نعش سڑک پر پڑی ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT