Saturday , December 16 2017
Home / ہندوستان / امریکہ کی ہندوستان سے متعلق پالیسی قابل ستائش :سفارتکار

امریکہ کی ہندوستان سے متعلق پالیسی قابل ستائش :سفارتکار

نئی دہلی/واشنگٹن(سیاست ڈاٹ کام )امریکہ کی ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے ہندوستان کو غیر یقینی کے اس دور میں ‘قابل بھروسہ پارٹنر’ بتانے جبکہ ‘اکسانے والی کارروائی’ کیلئے چین کو پھٹکار لگانے کی سینئر ہندوستانی سفارتکار نے ستائش کی ہے ۔وہ امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن کو بدھ کے روز دیئے جانے والے بیان پر اپنے رد عمل کا اظہار کررہے تھے ۔امریکہ میں ہندوستان کی سابق سفیر میرا شنکر،جی پارتھا سارتھی اور سابق خارجہ سکریٹری کنول سبل نے یو این آئی سے بات چیت میں کہا کہ ایشیا میں کسی ایک ملک کے دبدبہ کے بجائے مستقل توازن کویقینی بنانا چاہتے ہیں اور خطہ میں ہندوستان کے رول کو بہتر ڈھنگ سے سمجھا جارہاہے ۔مسٹر سبل نے کہا-”وہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے پہلی بار امید سے اچھا بیان تھا۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی افغانستان پالیسی کا اعلان کرتے اس وقت بھی ہندوستان کے بارے میں کچھ مثبت تبصرے کئے تھے ،لیکن یہ بیان زیادہ بڑا تھا”۔مسٹر ٹلرسن نے پہلی بار ہندوستان کے دورہ سے قبل ‘سینٹر فار اسٹریٹجک اینڈ انٹر نیشنل اسٹڈیز ‘میں-‘

اگلی صدی کیلئے ہندوستان کے ساتھ ہمارے تعلقات کو متعارف کرانا’ موضوع پر اپنے خطاب میں کہا کہ چین نے حال ہی میں بحیرہ جنوبی چین میں کی گئی اکسانے والی کارروائی ان انٹر نیشنل قوانین اور ضابطوں کیلئے براہ راست چیلنج ہے ،جس کاامریکہ اور ہندوستان حامی ہیں۔مسٹر ٹلر سن نے کہا کہ ساتھ ساتھ ترقی کررہے چین نے کئی بار ذمہ داری سے کام نہیں کیا،بلکہ ضابطوں پر مبنی انٹر نیشنل سسٹم کو کم سے کم کرنے تجربہ کیا ہے ۔جبکہ ہندوستان جیسا ملک ایک سسٹم کے دائرے میں کام کرتے ہیں،جس سے دوسرے ممالک کی خود مختاری کی حفاظت ہوتی ہے ۔مسز شنکر اور مسٹر پارتھاسارتھی مسٹر ٹلرسن کے ان بیانات کو ہندوستان اور امریکہ کے بہتر ہوتے رشتوں کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔مسز شنکر نے کہا-”مسٹر ٹلرسن کی تقریر ایشیا بحرالکاہل میں دونوں ممالک کے درمیان بڑھتے تال میل کی عکاس ہے ”۔مسٹر پارتھا سارتھی نے کہا کہ ہندوستان نے جس پرامن طریقے سے ڈوکلام بحران کا حل کیا ہے اس کی بھی امریکہ میں ستائش ہورہی ہے ۔انہوں نے پاکستان کا ذکر کرتے ہوئے کہا-”امریکی شہریوں کو اغواکاروں کے چنگل سے بازیاب کرانے کی وجہ سے بھلے ہی پاکستان کی کچھ ستائش کی گئی ہو لیکن افغانستان اور ہندوستان میں دہشت گردی پھیلانے میں پاکستا ن کے رول پر بہت زیادہ شبہ ہے ”۔مسز شنکر نے کہا کہ اگر پاکستان نے امریکہ کے ساتھ تعاون کیا تو وہ اس سے فائدہ حاصل کرے گا۔لیکن اگر اس نے ایسا نہیں کیا تو ٹرمپ انتظامیہ کا اس پر دباؤ بنانے کے اسباب ہیں۔مسٹر ٹلرسن نے کہا کہ امریکہ،چین کے ساتھ مثبت تعلقات بنانے کا خواہشمند ہے ،لیکن ہم اس بات سے انکار نہیں کریں گے کہ چین ضابطوں پرمبنی سسٹم کو چیلنج کررہاہے اور چین پڑوسی مملک کی خود مختاری کو نقصان پہنچا رہاہے ،جو امریکہ اور اس کے دوستوں کے لئے نقصاندہ ہے ۔

TOPPOPULARRECENT