Thursday , January 18 2018
Home / دنیا / امریکی صحافی کی 22 ماہ بعد شامی باغی گروپ سے رہائی

امریکی صحافی کی 22 ماہ بعد شامی باغی گروپ سے رہائی

بیروت ، 25 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صحافی و مصنف کو قریب دو سال کے بعد اغوا کاروں سے رہائی مل گئی ہے۔ مغویہ امریکی صحافی کو گولان کی پہاڑیوں پر متعین اقوام متحدہ کے اہلکاروں کے حوالے کیا گیا۔ امریکی وزیر خارجہ نے بھی صحافی کی رہائی کی تصدیق کر دی ہے۔ 45 سالہ ادیب و فری لانس صحافی پیٹر تھیو کرٹس کو اتوار 24 اگسٹ کو رہائی دی گئی۔ انہیں ا

بیروت ، 25 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صحافی و مصنف کو قریب دو سال کے بعد اغوا کاروں سے رہائی مل گئی ہے۔ مغویہ امریکی صحافی کو گولان کی پہاڑیوں پر متعین اقوام متحدہ کے اہلکاروں کے حوالے کیا گیا۔ امریکی وزیر خارجہ نے بھی صحافی کی رہائی کی تصدیق کر دی ہے۔ 45 سالہ ادیب و فری لانس صحافی پیٹر تھیو کرٹس کو اتوار 24 اگسٹ کو رہائی دی گئی۔ انہیں اکتوبر 2012 ء میں شام کی سرحد عبور کرنے کے فوری بعد النصرہ فرنٹ کے جہادیوں نے اغوا کر لیا تھا۔ انہیں اسرائیلی قبضے میں آئی ہوئی گولان پہاڑیوں کے تباہ شدہ القنیطرہ شہر کے قرب میں واقع ایک گاؤں الرفید میں اقوام متحدہ کے امن دستے کے حوالے کیا گیا۔ وہ فری لانس جرنلسٹ ہونے کے علاوہ ایک ادیب بھی ہیں۔ رہائی کے بعد اُن کا طبی معائنہ کیا گیا اور اُس کے بعد امریکی حکام کے حوالے کر دیا گیا۔ تھیو کرٹس کی رہائی کی تصدیق امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے کردی ہے۔ اس ضمن میں جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ آخرکار وہ واپس اپنے گھر لوٹ رہے ہیں۔ کیری نے اپنے بیان میں کہا کہ کرٹس کی رہائی خاص طور پر گزشتہ ہفتے کے دوران ہونے والے المیے کے بعد ایک ایسی خبر ہے کہ جس سے اطمینان حاصل ہوا ہے۔ گزشتہ ہفتے کے دوران عراق و شام میں متحرک انتہا پسند مسلمان تنظیم اسلامک اسٹیٹ نے ایک امریکی صحافی جیمز فولی کا سر قلم کر کے اس کی ویڈیو جاری کی تھی۔ تھیو کرٹس کی رہائی کی اطلاع امریکی صدر اوباما کو بھی دی گئی۔ وائٹ ہاؤس کے مطابق صدرکرٹس کی رہائی پر وہ بہت خوش ہوئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT