Monday , September 24 2018
Home / دنیا / امریکی پولیس آفیسر کی گرفتاری کھوبرگاڑے کی گرفتاری کا ردعمل؟

امریکی پولیس آفیسر کی گرفتاری کھوبرگاڑے کی گرفتاری کا ردعمل؟

واشنگٹن 5 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہاکہ امریکہ کے ساتھ خوشگوار تعلقات ایک بار پھر قائم ہوسکتے ہیں بشرطیکہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے ساتھ ماضی قریب میں ہوئی کچھ تلخیوں کو بھلاکر پیشرفت کا سلسلہ جاری رکھیں۔ یاد رہے کہ صرف کچھ روز قبل ایک امریکی پولیس آفیسر کو نئی دہلی ایرپورٹ پر کارتوسوں کے ساتھ گرفت

واشنگٹن 5 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہاکہ امریکہ کے ساتھ خوشگوار تعلقات ایک بار پھر قائم ہوسکتے ہیں بشرطیکہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے ساتھ ماضی قریب میں ہوئی کچھ تلخیوں کو بھلاکر پیشرفت کا سلسلہ جاری رکھیں۔ یاد رہے کہ صرف کچھ روز قبل ایک امریکی پولیس آفیسر کو نئی دہلی ایرپورٹ پر کارتوسوں کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا۔ قبل ازیں سفارت کار دیویانی کھوبر گاڑے کی ویزا دھوکہ دہی معاملہ نے بھی امریکہ اور ہندوستان کو ایک دوسرے کے مدمقابل کھڑا کردیا تھا۔

دریں اثناء اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی ڈپٹی ترجمان میری ہاف نے کہاکہ ہم چاہتے ہیں کہ گزشتہ کچھ ماہ کے دوران ہندوستان کے ساتھ پیدا ہوئی کشیدگی کو ہم فراموش کردی جائیں۔ میری ہاف بھی دراصل اُس واقعہ کی جانب اشارہ کررہی تھیں جب نئی دہلی میں نیویارک پولیس ڈپارٹمنٹ کے افسر 49 سالہ نینی انکارنیش کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے اُنھوں نے کہاکہ ہم اس معاملہ کی گہرائی میں اس لئے نہیں جانا چاہتے کہ اس سے دونوں ممالک کے تعلقات کی کوئی وابستگی نہیں ہے۔ اُنھوں نے ایک بار پھر کہاکہ ہندوستان، امریکہ کا ایک بااعتماد دوست ہے اور اگر ایسا کچھ ہوا بھی ہے تو اُسے فراموش کردینا ہی بہتر ہے۔ ہمارا خیال ہے کہ امریکہ جس سطح پر سوچ رہا ہے ہندوستان اور ہندوستانی عوام بھی اس نہج پر سوچ رہے ہوں گے۔ اُنھوں نے ایک بار پھر کہاکہ وہ اس معاملہ میں معلومات کا زیادہ تبادلہ اس لئے نہیں کرسکتی کہ یہ کسی آفیسر کا خانگی معاملہ ہے حالانکہ نیویارک پولیس ڈپارٹمنٹ امریکہ سے جدا نہیں ہے۔

یاد رہے کہ نیویارک کانگریس مین پیٹر کنگ نے پولیس افسر کی گرفتاری کے پس پشت سیاسی محرکات کارفرما ہونے کا دعویٰ کیا تھا اور کہاکہ ہندوستانی سفارت کار دیویانی کھوبر گاڑے کی گرفتاری کے ردعمل سے تعبیر کیا تھا۔ پیٹر کنگ نے امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ سے خواہش کی کہ وہ پولیس آفیسر کی عاجلانہ رہائی کو یقینی بنائے۔ نینسی انکارنیش انڈین آرمس ایکٹ 1959 کی خلاف ورزی کا مرتکب قرار دیا گیا ہے جس کے تحت اُنھیں سات سال کی سزائے قید دی جاسکتی ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT