Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / امیت شاہ کے بیٹے کی کمپنی ’ ٹمپل ‘ کا گھنٹا بجانے میں کئی قائدین مصروف

امیت شاہ کے بیٹے کی کمپنی ’ ٹمپل ‘ کا گھنٹا بجانے میں کئی قائدین مصروف

جئے شاہ کو شاہ زادے کا لقب ، ملک کے چوکیدار کی قلعی کھل گئی
حیدرآباد۔ 12اکٹوبر(سیاست نیوز) کہاوت مشہور ہے کہ ’’سیاں بھئے کوتوال تو پھر ڈر کاہے کا‘‘ اگر اس کہاوت میں تھوڑی سی ترمیم کی جائے تو یہ کہا جا سکتا ہے جب ’’ چاچا ہو چوکیدار تو ڈر کاہے کا‘‘ ۔ بھارتیہ جنتا پارٹی سربراہ کے فرزند کی کمپنی میں کی جانے والی سرمایہ کاری کے معاملہ میں انکشاف کے بعد امیت شاہ کے فرزند جئے شاہ صرف جئے شاہ نہیں رہے بلکہ انہیں ’’ شاہ زادے ‘‘ کہا جانے لگا ہے ۔ 8اکٹوبر کو ملک کی ایک سرکردہ ویب سائٹ کی جانب سے امیت شاہ کے فرزند کی کمپنی میں کی جانے والی سرمایہ کاری اور اس کمپنی کے اثاثوں میں ہونے والے بے دریغ اضافہ کے بعد جو صورتحال پیدا ہوئی ہے اس میں یہ کہا جا نے لگا ہے کہ ملک کا اقتدار سنبھالنے سے قبل جنہوں نے کہا تھا کہ ’’ نہ کھاؤں گا نہ کھانے دوں گا‘‘ اور خود کو ملک کا چوکیدار قرار دینے والوں کی خاموشی نے اس بات کو یقین میں بدل دیا ہے کہ اس حکومت کے دوران بھی مخصوص لوگوں کا ہی’’وکاس‘‘ ہو رہا ہے اور اس وکاس کے بھرپور ثمرات انہیں حاصل ہونے لگے ہیں۔ جئے شاہ کی کمپنی کے اثاثو ںمیں ہونے والے بے دریغ اضافہ کے انکشاف کے فوری بعد ملک کے چوکیدار طبقہ میں ہلچل پیدا ہوگئی اور انتخابات کے دوران ’’شہزادے ‘‘ کہنے والے امیت شاہ کے ’’شاہ زادے ‘‘ کے دفاع میں اتر آئے۔ سرکاری طور پر وزیر ریلوے نے کمپنی کے ترجمان کی طرح اس بات سے ذرائع ابلاغ کو خوفزدہ کرنے کی کوشش کی کہ اس ویب سائٹ پر جو بی جے پی صدر کے ’’شاہ زادے‘‘ کی کمپنی کا انکشاف کیا اس پر ہتک عزت کا مقدمہ دائر کرنے کے فیصلہ سے واقف کروایا۔ شاہ زادے کی کمپنی جس کا نام ’’ٹمپل‘‘ ہے اس کا گھنٹا سب نے بجانا شروع کردیا ۔ جب شاہ زادے کے ٹمپل کا گھنٹا بجنا شروع ہوا تو بھارتیہ جنتا پارٹی کو اس کی گونج سنائی دینے لگی۔ جئے شاہ کی کمپنی کے اثاثے 50ہزار سے بڑھ کر 80کروڑ اندرون ایک سال پہنچنے کے راز سے پردے اٹھائے جانے لگے ہیں اور اب ملک کی اپوزیشن جو اب تک مختلف وجوہات کی بناء پر خاموش تماشائی بنی ہوئی تھی وہ بھی ’’شاہ ٹمپل انٹرپرائزرس کا گھنٹا بجانے لگی ہے جس کے نتیجہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی بوکھلاہٹ کا شکار ہونے لگی ہے۔ ملک میں سیاسی اقرباء پروری کے خاتمہ اور رشوت سے پاک ماحول کی فراہمی کے دعوے کرنے والی جماعت کے سربراہ کے فرزند کے اسکام سے یہ ظاہر ہوچکا ہے کہ سیاسی اقرباء پروری اس جماعت میں بھی موجود ہے۔ ہندستان میں سیاسی رشوت ستانی اور اسکامس کے انکشاف اور اس کے متعلق عوام کو واقف کروانے کی ذمہ داری کو پورا کرنے والے اداروں پر ہتک عزت کے مقدمات درج کرواتے ہوئے انہیں ہراساں کرنے کا چلن شروع ہو چکا ہے اور اس چلن میں ملک کی بیشتر تمام سیاسی جماعتیں ملوث ہوتی جا رہی ہیں اور خبروں کے انکشاف کی صورت میں ذرائع ابلاغ ادارو ںکو نشانہ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ملک میں 2014 سے قبل یہ اعلانات کئے جا رہے تھے کہ ’’اچھے دن آنے والے ہیں‘‘ لیکن انتخابات کے بعد اندرون تین برس یہ بات واضح ہوچکی ہے کہ موجودہ حکومت کے اچھے دن کس کیلئے آئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT