Tuesday , September 25 2018
Home / Top Stories / امیت شاہ کے خلاف الیکشن کمیشن کی نوٹس

امیت شاہ کے خلاف الیکشن کمیشن کی نوٹس

نئی دہلی، 7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش کے فساد زدہ علاقہ میں انتخابی مہم کے دوران بی جے پی میں وزارت عظمیٰ امیدوار نریندر مودی کے قریبی ساتھی امیت شاہ کے ’’انتقام‘‘ سے متعلق متنازعہ ریمارکس کا نوٹ لیتے ہوئے الیکشن کمیشن نے بادی النظر میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی ایک نوٹس جاری کی ہے۔ امیت شاہ کے خلاف جاری اس نوٹس میں

نئی دہلی، 7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش کے فساد زدہ علاقہ میں انتخابی مہم کے دوران بی جے پی میں وزارت عظمیٰ امیدوار نریندر مودی کے قریبی ساتھی امیت شاہ کے ’’انتقام‘‘ سے متعلق متنازعہ ریمارکس کا نوٹ لیتے ہوئے الیکشن کمیشن نے بادی النظر میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی ایک نوٹس جاری کی ہے۔ امیت شاہ کے خلاف جاری اس نوٹس میں ان سے اندرون تین دن جواب داخل کرنے کی ہدایت کے ساتھ کہا گیا ہے کہ اترپردیش کے اضلاع مظفر نگر ‘ شاملی اور بجنور میں مہم کے دوران اپنی تقاریر میں کی گئی انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر ان کے خلاف کارروائی کیوں نہ کی جائے۔ الیکشن کمیشن کی نوٹس میں کہا گیا ہے کہ ’’ یہ کمیشن بادی النظر میں یہ نظریہ رکھتا ہے کہ مذکورہ بیان کے ذریعہ آپ نے انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی ہے۔ چنانچہ کمیشن آپ کو موقع دیتا ہے کہ 9 اپریل کو شام 5بجے تک آپ اپنے موقف کی وضاحت کریں۔ ناکامی کی صورت میں الیکشن کمیشن اپنے طور پر کوئی فیصلہ کرے گا‘‘۔ امیت شاہ نے مظفر نگر اور متصلہ اضلاع میں اپنی انتخابی مہم کے دوران کہا تھا، ’’یہ انتخابات عزت نفس کیلئے ہیں ۔ یہ انتخابات اپنی توہین کا بدلہ لینے کیلئے ہیں، یہ انتخابات ان افراد کو ایک سبق سکھانے کیلئے ہیں جنہوں نے آپ کے ساتھ ناانصافی کی ہے‘‘۔ ان کے متنازعہ ریمارکس پر اترپردیش حکام نے امیت شاہ کے خلاف دو ایف آئی آر درج کئے ہیں ۔ بی جے پی نے امیت شاہ کے خلاف ایف آئی آر درج کئے جانے کی مذمت کی ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT