Sunday , June 24 2018
Home / Top Stories / انتخابات میں شکست کیلئے ہندوستان اور امریکہ ذمہ دار : راجہ پکسے

انتخابات میں شکست کیلئے ہندوستان اور امریکہ ذمہ دار : راجہ پکسے

کولمبو ۔ 13 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا کے سابق صدر مہندا راجہ پکسے نے جنوری میں ملک میں منعقدہ انتخابات میں ان کی شرمناک شکست کیلئے ہندوستان، امریکہ اور یوروپین ممالک کو موردالزام ٹھہرایا ہے۔ ہانگ کانگ سے شائع ہونے والے ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ کو ایک انٹرویو کے دوران انہوں نے کہا کہ یہ ایک کھلی کتاب ہے۔ سری لنکا میں انتخابات کے دو

کولمبو ۔ 13 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا کے سابق صدر مہندا راجہ پکسے نے جنوری میں ملک میں منعقدہ انتخابات میں ان کی شرمناک شکست کیلئے ہندوستان، امریکہ اور یوروپین ممالک کو موردالزام ٹھہرایا ہے۔ ہانگ کانگ سے شائع ہونے والے ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ کو ایک انٹرویو کے دوران انہوں نے کہا کہ یہ ایک کھلی کتاب ہے۔ سری لنکا میں انتخابات کے دوران امریکی ، ناروین اور یوروپین کھلم کھلا ان کے (راجہ) خلاف کام کررہے تھے جس میں ہندوستان کی RAW (ریسرچ اینڈ انالائسس ونگ) کا بھی اہم رول تھا۔ یاد رہیکہ وزیراعظم ہند نریندر مودی عنقریب سری لنکا کا دورہ کرنے والے ہیں، جس سے قبل راجہ پکسے نے کہا کہ امریکہ اور ہندوستان نے ان کی شکست کیلئے اپنے سفارتخانوں کا بخوبی استعمال کیا۔ راجہ پکسے نے اس سلسلہ میں ان کی شکست کے فوری بعد جاری کی گئی ایک میڈیا رپورٹ کا بھی حوالہ دیا، جس میں یہ انکشاف کیا گیا تھا کہ سری لنکا کی حریف جماعتوں سری لنکا فریڈم پارٹی (SLFP) اور یونائیٹیڈ نیشنل پارٹی (UNP) کو ان کے خلاف متحد کرنے RAW کے ایک عہدیدار نے انتہائی اہم رول ادا کیا۔

رپورٹ کے مطابق مذکورہ عہدیدار جس کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے، اسے ملک چھوڑ دینے کا حکم بھی دیا گیا تھا۔ دوسری طرف ہندوستان نے یہ کہہ کر رپورٹ مسترد کردی ہیکہ سری لنکا میں کسی بھی ہندوستانی سفارتکار کے عہدہ کی میعاد عام طور پر تین سال ہوئی ہے اور گذشتہ سال جن عہدیداروں کا تبادلہ کیا گیا ہے ان سب نے اپنے عہدے کی میعاد مکمل کرلی تھی۔ وزارت خارجی امور کے ترجمان نے بھی توثیق کرتے ہوئے کہا کہ تبادلے معمول کے مطابق ہیں۔ راجہ پکسے کو جنوری میں منعقدہ انتخابات میں اپنے ہی سابق بااعتماد ساتھی میتری پالا سری سینا سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا

اور اس وقت انہوں نے کہا تھا کہ انہیں تمام حقائق سے واقفیت نہیں تھی۔ اپنے انٹرویو میں انہوں نے ہندوستانی شہریوں سے سوال کرتے ہوئے کہا کہ وہ (ہندوستانی شہری) آخر ایسا کیوں کررہے ہیں۔ یہ ایک کھلا راز ہے کہ آپ لوگ کیا کررہے ہیں۔ میں نے تیقن دیا تھا کہ سری لنکا کی سرزمین کو کسی بھی دوست ملک کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ اپنے دورحکومت میں چینی انفراسٹرکچر پراجکٹ شروع کئے جانے کا انہوں نے دفاع کیا۔ انہوں نے سری لنکا کی نئی حکومت پر الزام عائد کیا کہ وہ ملک کی داخلی سیاست میں چین کو غیرضروری طور پر گھسیٹ رہی ہے۔ ہمیں چین کی جانب سے مدد کا ہاتھ دراز کرنے پر چین کا شکریہ ادا کرنا چاہئے جبکہ سری لنکائی عوام چین کے ساتھ کسی مجرم جیسا برتاؤ کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT