Wednesday , June 20 2018
Home / Top Stories / انتخابی سیاست سے سبکدوش۔باقیماندہ زندگی ملت کیلئے وقف

انتخابی سیاست سے سبکدوش۔باقیماندہ زندگی ملت کیلئے وقف

دوبدو پروگرام میں ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کا اعلان

دوبدو پروگرام میں ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کا اعلان

حیدرآباد 9 مارچ ( دکن نیوز) جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے آج انتخابی سیاست سے اپنی سبکدوشی کا اعلان کیا اور کہا کہ تقریبا آج تمام سیاسی پارٹیوں میں اخلاقی اقدار اور آئیڈیالوجی کا فقدان ہے، سیاسی پارٹیاں عوامی مفادات کے بجائے اقتدار کی راہداریوں تک رسائی حاصل کرنے کو ترجیح دینا اپنا مقصد بنالیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ فرقہ پرستی کی مخالفت کرتے تھے وہ آج اقتدار کی خاطر فرقہ پرستوں سے ساز باز کرنے آمادہ و تیار ہیں ان حالات میںوہ سمجھتے ہیں کہ ان کیلئے بہتر راستہ ملت اسلامیہ کی خدمت ہے۔ جناب زاہد علی خان آج ایس اے ایمپرئیل گارڈن (ٹولی چوکی) میں ادارہ سیاست و ایم ڈی ایف کے زیر اہتمام منعقدہ 29 ویں دوبدو ملاقات پروگرام سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ آندھرا پردیش خاص طور پر حیدرآباد کے مسلمان تعلیمی، معاشی اور سماجی اعتبار سے پسماندگی کا شکار ہیں اور وہ ایک پُر آشوب دور سے گذر رہے ہیں اس لئے ان کی خدمت ہی ہمیشہ سے میرا نصب العین رہا ہے اور اب میں نے فیصلہ کرلیا ہے کہ اپنے اخبار کے ذریعہ مسلمانوں کو باعزت مقام دلوانے کیلئے پوری پوری کوشش کروں گا جو شہرت و کامیابی مجھے صحافت اور اپنے اخبار کے ذریعہ ملی ہے وہ کسی بڑے اعزاز سے کم نہیں ہے اس لئے میں نے طئے کیا ہے کہ اپنی باقی زندگی کو ملت اسلامیہ کی ترقی کیلئے وقف کردوں۔قارئین سیاست اور برادران اسلام نے خاص طور پر جو مجھے عزت بخشی اور اعلی مقام عطا کیا اس کا لحاظ کرتے ہوئے میرے لئے مسلمانوں کی خدمت ہی واحد مقصد حیات ہے مجھے امید ہے کہ میں تعلیم، معیشت اور سیاسی و سماجی میدانوں میں مسلمانوں کو ان کا مستحقہ مقام دلوانے میں کامیاب ہوں گا۔‘‘ جناب زاہد علی خاں نے مسلمانوں کو مشورہ دیا کہ وہ اپنے بچوں کی شادیوں میں کم سے کم اخراجات کریں فائیو اسٹار شادی خانہ کی بجائے معمولی شادی خانوں میں شادی کی تقاریب کا اہتمام کیا جانا چاہئے۔ لوازات کو محدود کرتے ہوئے اخراجات میں بچت کی جائے اور اسی رقم سے غریب لڑکیوں کی شادیوں میں فراخدلانہ امداد دیں انہوں نے خاص طو رپر لڑکے والوں سے کہا کہ وہ شادی کے موقع پر کم از کم کسی ایک غریب لڑکی کی شادی کے اخراجات کو اپنے پر لازمی کرلیں انہوں نے اس موقع پر سامعین کو ایک دعوت نامے کا مشاہدہ کروایا جو دو فٹ لمبائی اور چوڑائی پر مشتمل تھا۔

انہوں نے اس اقدام کو شرمناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے ہمارے ذہنی دیوالیہ پن اور جھوٹی شان کا پتہ چلتا ہے۔ جناب زاہد علی خان نے کہا کہ مسلمانوں کو چاہئے کہ وہ اپنی گم گشتہ عزت اور وقار کو بحال کریں ورنہ خدا نہ کرے کہ ہم ایک کمزور قوم کی حیثیت حاصل کرلیںگے ۔ انہوں نے فیض عام ٹرسٹ کی ملی و سماجی خدمات کی سراہنا کی۔ جناب زاہد علی خان نے والدین و سرپرستوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے لڑکے و لڑکیوں کو اعلی تعلیم سے آراستہ کریں انہیں یہ جان کر خوشی ہوئی کہ اس وقت تقریبا 16 ہزار مسلم نوجوان ہائی ٹیک سٹی کی کمپنیوں میں برسر خدمت ہیں۔ یہ رجحان قوم کیلئے حوصلہ افزاء اور قابل تحسین ہے۔ جناب محمد معین صدر فیڈریشن ٹولی چوکی کالونیز نے کہا کہ سیاست و ایم ڈی ایف کی جانب سے اب تک جتنے بھی دوبدو ملاقات پروگرام رہے وہ نہایت کامیاب و کامران رہے اور ہزاروں رشتہ طئے پائے۔ اس بات پر انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ مسلمانوں میں اپنی شادیوں کی تقاریب کو انتہائی پر تکلف بنادیا ہے غیروں کی رسومات کو اپنا کر ہم اسلامی تعلیمات کو فراموش کرچکے ہیں، انہوں نے جناب زاہد علی خان کے اس اقدام کی ستائش کی کہ انہوں نے شادیوں میں کھانے کا بائیکاٹ کر کے ساری قوم کو جھنجوڑا ہے۔ اس تحریک کے نہایت ثمر آور نتائج برآمد ہورہے ہیں۔ انہوں نے لڑکے والوں کے منافقانہ رویہ کی مثال دی اور کہا کہ حال ہی میں شادی طئے کرنے کے وقت لڑکے کے والدین نے کوئی مطالبہ نہیں کیا تھا لیکن شادی سے عین قبل ان کے بے پناہ مطالبات لڑکی والوں کیلئے ناقابل برداشت بن گئے آخر کار انہیں مکان رہن رکھ کر سود سے حاصل کی گئی رقم سے اپنی بیٹی کی شادی انجام دینی پڑی ۔جناب عابد صدیقی صدر ایم ڈی ایف نے کہا کہ مسلم شادی بیاہ کے معاملات میں کئی طرح کی برائیاں شدت اختیار کرتی جارہی ہیں اس سیلاب کو روکنا ہم سب کی اخلاقی ذمہ داری ہے، ہمارا مقصد حیات بندگان خدا کو نیکیوں کی طرف راغب کرنا اور برائیوں سے انہیں روکنا ہے لیکن افسوس کہ ہم اپنے مقصد سے دور ہوتے جارہے ہیں اس کے بھیانک نتائج سے سارا مسلم معاشرہ دوچار ہے۔ جناب محمد خواجہ معین الدین جنرل سکریٹری نے ابتداء میں رپورٹ پیش کی اور کونسلنگ کے طریقہ کار سے واقف کروایا۔ جناب محمد شاہد حسین نے جلسہ کی کارروائی چلائی۔ جناب سید الیاس باشاہ کی قراء ت کلام پاک سے جلسہ کا آغازہوا۔

جناب احمد صدیقی مکیش نے بارگاہ رسالت میں ہدیہ نعت پیش کیا ۔ جناب محمد معین الدین، جناب سید افتخار حسین سکریٹری فیض عام ٹرسٹ نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ اس موقع پر جناب عثمان الہاجری ، ڈاکٹر سید غوث الدین ، پروفیسر تراب علی، مسعود اختر (سعودی ایر لائنز) جناب حامد کمال، منور علی مختصر، تاج الدین ،عبدالستار شاہد، ابو ایمل، میر لیاقت علی ہاشمی، جناب ماجد انصاری، مقبول الہاجری، محمد مجیب کے علاوہ پانچ ہزار سے زائد والدین و سرپرستوں نے شرکت کی۔ ڈاکٹر ایس اے مجید، اقبال احمد خان، ایوب حیدری، ایم اے قدیر، ضیاء الرشید،محمد برکت علی، محمد فرید الدین ، محمد نصر اللہ خان، سید ناظم الدین ، نثار احمد بیگ ایڈوکیٹ ،زاہد فاروقی، محترمہ عابدہ بیگم، ریحانہ نواز، کوثر جہاں، ڈاکٹر دردانہ، شاہین افروز، وحیدہ خاتون ، رئیس النساء، ترنم کے علاوہ کئی والینٹرس نے انتظامات کی نگرانی اور والدین و سرپرستوں سے پیامات کی نشاندہی میں بھر پور تعاون کیا ۔ جناب ایم اے قدیر کے بموجب آج لڑکوں کے 160 اور لڑکیوں کے 450 نئے رجسٹریشن کروائے گئے۔ ٹولی چوکی مین روڈ پر دور دور تک کاروں و موٹر سائیکلوں کی پارکنگ دیکھی گئی۔ صبح 10 بجے سے شام 6 بجے تک والدین و سرپرستوں کی آمد ورفت کا سلسلہ جاری رہا۔ جناب شاہد حسین نے کارروائی چلائی اور شکریہ ادا کیا ۔

TOPPOPULARRECENT