Wednesday , January 24 2018
Home / شہر کی خبریں / انتخابی نتائج سے قبل ٹی آر ایس کو ارکان اسمبلی کی بغاوت کا خوف

انتخابی نتائج سے قبل ٹی آر ایس کو ارکان اسمبلی کی بغاوت کا خوف

سربراہ ٹی آر ایس کے سی آر پر بھروسہ نہیں: ترجمان کانگریس شرون کمار

سربراہ ٹی آر ایس کے سی آر پر بھروسہ نہیں: ترجمان کانگریس شرون کمار
حیدرآباد /8 مئی (سیاست نیوز) پردیش کانگریس کمیٹی کے ترجمان نے کہا کہ ارکان اسمبلی پر سربراہ ٹی آر ایس کے چندر شیکھر راؤ کو بھروسہ نہیں ہے۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ترجمان پردیش کانگریس کمیٹی شرون کمار نے کہا کہ ماضی میں ٹی آر ایس کے دس ارکان اسمبلی نے پارٹی قیادت کے خلاف بغاوت کی تھی، اس بار بھی ٹی آر ایس کو ڈر ہے کہ پارٹی کے ارکان اسمبلی پارٹی چھوڑ سکتے ہیں، لہذا نتائج سے قبل ٹی آر ایس پر خوف طاری ہے اور اس نے اپنے ارکان اسمبلی کو پارٹی سے جوڑے رکھنے کے لئے ہاتھ پیر مارنا شروع کردیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ماضی میں پیش آئے واقعات چندر شیکھر راؤ کے سرپر بھوت بن کر منڈلا رہے ہیں، جس سے ان کی نیند اُڑ گئی ہے۔ اسی لئے ٹی آر ایس کا ایک وفد دہلی پہنچ کر مرکزی حکومت سے نمائندگی کرتے ہوئے یوم تاسیس کی تاریخ (2 جون) تبدیل کرنے کا مطالبہ کر رہا ہے۔ انھوں نے ٹی آر ایس پر یوم تاسیس کی تاریخ کو سیاسی مسئلہ بناکر سیاسی فائدہ اٹھانے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ عوام وعدوں پر قائم رہنے والوں پر بھروسہ کرتے ہیں، جب کہ سربراہ ٹی آر ایس اپنے وعدوں پر قائم نہیں رہے، کیونکہ علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دینے کے باوجود انھوں نے اپنی پارٹی کو کانگریس میں ضم نہیں کیا اور نہ ہی کسی دلت کو چیف منسٹر بنانے کے وعدہ پر برقرار رہے۔ انتخابات سے قبل تک دلت کو چیف منسٹر بنانے کا عوام سے وعدہ کیا تھا اور مابعد انتخابات خود چیف منسٹر بننے کی سعی کر رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ علاقہ تلنگانہ میں عوام نے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دینے والی کانگریس پر اعتماد کا اظہار کیا ہے، لہذا کانگریس ہی نئی ریاست میں پہلی حکومت تشکیل دے گی، جب کہ کے چندر شیکھر راؤ جھوٹی تشہیر کا سہارا لے کر خود چیف منسٹر بننے اور تلنگانہ میں ٹی آر ایس حکومت کی تشکیل کا اشارہ دے رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT