Sunday , January 21 2018
Home / سیاسیات / انتخابی نتائج 2013ء کی عوامی رائے کی توسیع

انتخابی نتائج 2013ء کی عوامی رائے کی توسیع

نئی دہلی ۔ 13 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) شیلاڈکشٹ کی ان پر تنقید کی پرواہ کئے بغیر کانگریس قائد اجئے ماکن نے آج الزام سابق چیف منسٹر دہلی پر عائد کرنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ انتخابی ناکامی صرف 2013ء کی عوامی رائے کی توسیع ہے۔ اجئے ماکن نے ان پر کل ہند کانگریس کے اجلاس میں شیلاڈکشٹ کے تبصرہ پر سوالات کی بوچھار کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

نئی دہلی ۔ 13 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) شیلاڈکشٹ کی ان پر تنقید کی پرواہ کئے بغیر کانگریس قائد اجئے ماکن نے آج الزام سابق چیف منسٹر دہلی پر عائد کرنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ انتخابی ناکامی صرف 2013ء کی عوامی رائے کی توسیع ہے۔ اجئے ماکن نے ان پر کل ہند کانگریس کے اجلاس میں شیلاڈکشٹ کے تبصرہ پر سوالات کی بوچھار کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ شیلاڈکشٹ کے فرزند اور پارٹی قائد سندیپ ڈکشٹ نے کئی سوالات کئے تھے اور اجئے ماکن نے ابتداء میں اس تنازعہ سے دامن بچانے کی کوشش کی تھی۔ انہوں نے یاد دہانی کی کہ دہلی میں کانگریس امور کے انچارج پی سی چاکو کل کہہ چکے ہیں کہ شیلاڈکشٹ خاموشی اختیار کریں جبکہ سونیا گاندھی نے سینئر قائدین کی برسرعام تکرار کو نامنظور کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ شخصی طور پر ان سے ملاقات کیلئے جائیں گے

اور ان سے سوال کریں گے کہ ہم سے غلطی کہاں ہوئی تاکہ آئندہ ہم احتیاط کرسکیں۔ اجئے ماکن نے تنازعہ کو شیلاڈکشٹ کے حامیوں میں منتقل کرنے کی کوشش کرتے ہوئے یہ تبصرہ کیا۔ تاہم انہوں نے اس سوال پر کہ پارٹی عوام کے ساتھ کیا رویہ اختیار کرے گی۔ پارٹی کا جہاز طوفان میں کیوں گھر گیا ہے۔ کس نے اس میں شگاف کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سونیا گاندھی کے تبصروں کے بعد بھی اگر کوئی شخص اپنی اصلاح نہ کرے تو یہ متعلقہ افراد کا کام ہے کہ اس کا جائزہ لیں اور مناسب کارروائی کریں۔ وہ واضح طور پر سینئر قائد اے کے انٹونی کی زیرقیادت تادیبی کارروائی کمیٹی کا حوالہ دے رہے تھے۔ اسمبلی انتخابات اجئے ماکن کی قیادت میں لڑے گئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی نتائج 2013ء کی عوامی رائے کی صرف توسیع ہیں۔

TOPPOPULARRECENT