Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / انتخابی ٹکٹوں پر اکھلیش ۔شیوپال کا اقتدار کا تازہ کھیل

انتخابی ٹکٹوں پر اکھلیش ۔شیوپال کا اقتدار کا تازہ کھیل

لکھنو۔26 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ٹکٹوں کی تقسیم کے حساس مسئلہ پر سماج وادی پارٹی میں اختلافات دوبارہ ابھر آئے جبکہ چیف منسٹر اکھلیش یادو نے امیدواروں کی ایک متوازی فہرست پیش کی۔ 175 نشستوں کے لئے شیوپال یادو کی جانب سے انتخاب واضح طور پر ان کے بھتیجے اکھلیش کو پسند نہیں آیا تھا۔ پارٹی کے تاخلی ذرائع کے بموجب سمجھا جاتا ہے کہ انہوں نے خود اپنی فہرست تیار کی جو 403 ان کے ترجیحی امیدواروں پر مشتمل ہے۔ یو پی اسمبلی کی نشستیں بھی 403 ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ اس فہرست کو ان کے والد اور پارٹی کے صدر ملائم سنگھ یادو کی منظوری حاصل ہوجائے۔ اکھلیش یادو کا گزشتہ تین دن میں یہ تیسرا اقتدار کا کھیل ہے۔ 24ڈسمبر کو اکھلیش یادو نے پہلی بار رکن اسمبلی بننے والے افراد سے اپنی رہائش گاہ پر ملاقات کی تھی اور انہیں پارٹی ٹکٹ دینے کا تیقن دیا تھا۔ برسر اقتدار پارٹی میں ایک بار پھر اختلافات منظر عام پر آگئے جبکہ شیوپال نے مسلسل کئی ٹوئٹر پیغام روانہ کرتے ہوئے ملائم سنگھ یادو کو تجویزیں پیش کیں کہ آئندہ چند ماہ میں مقرر اسمبلی انتخابات کے لئے ٹکٹ کیسے تقسیم کئے جائیں۔ شیوپال یادو نے کہا کہ 175 امیدواروں کے نام پہلے ہی قطعیت پاچکے ہیں اور انتباہ دیا کہ کسی بھی تبدیلی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ اس سے پارٹی کی شبیہ کو نقصان پہنچے گا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT