انتخابی ہزیمت کے بعد مودی کا آج پارٹی ایم پیز سے خطاب

نئی دہلی ، 12 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی جمعرات کو بی جے پی ارکان پارلیمنٹ سے خطاب کریں گے اور اس کے بعد پارٹی کے اہم تنظیمی قائدین کی سات گھنٹے طویل میٹنگ منعقد کی جائے گی۔ یہ میٹنگس پانچ ریاستوں کے منگل کو معلنہ انتخابی نتائج کے پس منظر میں منعقد ہورہی ہیں، جس میں پارٹی کو 2014ء میں مرکز میں برسراقتدار آنے کے بعد سے بدترین انتخابی جھٹکہ لگا ہے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اپنی حکمرانی والی تمام تینوں ریاستوں مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ اور راجستھان میں اقتدار سے محروم ہوگئی، اور تلنگانہ میں مضبوط طاقت کے طور پر اُبھرنے اس کا عزم لگ بھگ پوری طرح ہوا ہوچکا کیونکہ اس کی عددی طاقت پہلے کی پانچ سے گھٹ کر محض ایک نشست تک محدود ہوگئی ہے۔ میزورم میں بی جے پی نے ایک سیٹ جیتی جبکہ اپوزیشن میزو نیشنل فرنٹ نے برسراقتدار کانگریس کو شکست دی۔ مودی بی جے پی پارلیمنٹری پارٹی سے لگ بھگ ہر ہفتے خطاب کرتے ہیں جب پارلیمانی سیشن جاری ہوتا ہے لیکن اس مرتبہ اسمبلی انتخابات میں پارٹی کی ناکامیوں کے پیش نظر اُن کی تقریر کی زیادہ اہمیت ہوگئی ہے۔ وہ توقع ہے الیکشن کے نتائج پر بولیں گے، اور آنے والے چیلنجوں پر روشنی ڈالیں گے جبکہ پارٹی 2019ء لوک سبھا انتخابات کیلئے اپنی مہم کو قطعیت دے رہی ہے۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ بعدازاں صدر بی جے پی امیت شاہ پارٹی کے اپنے قومی عہدے داروں، اسٹیٹ یونٹ کے صدور اور تنظیمی امور سنبھالنے والے ذمہ داروں کی میٹنگ کی صدارت کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT