Tuesday , August 21 2018
Home / دنیا / انتقامی حملے کے خلاف غزہ عسکریت پسندوں کو اسرائیلی انتباہ

انتقامی حملے کے خلاف غزہ عسکریت پسندوں کو اسرائیلی انتباہ

غزہ پٹی کی سرنگ کی تباہی اور اس سے برآمد نعشوں کا تذکرہ ‘ اسرائیلی جنرل کا بیان
یروشلم ۔ 12نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) اسرائیل کے ایک جنرل نے فلسطین کے عسکریت پسندوں کو انتقام لینے کیلئے حملہ کرنے اور غزہ پٹی کی گذشتہ ماہ یہودی مملکت میں جانے والی سرنگ کو دھماکہ سے اڑا دینے جیسے حملے کے خلاف انتباہ دیا ۔ میجر جنرل وائی مورڈی چائی صدر وزارت دفاع برائے فلسطینی سرزمین میں کارروائیاں ‘ نے عربی زبان کے ویڈیو میں جسے ہفتہ کی رات دیر گئے تقسیم کیا گیا ‘یہ انتباہ دیا ۔ 30اکٹوبر کو اسرائیلی کارروائی کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسرائیل نے اسرائیلی خود محتار سرزمین میں دہشت گردو ں کی سرنگ کو تباہ کردیا جس کے نتیجہ میں 12فلسطینی عسکریت پسند جن کا تعلق حماس اور اسلامی جہاد سے تھا ہلاک ہوگئے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس منصوبہ سے واقف ہیں کہ فلسطینی اسلامی جہاد دہشت گرد گروپ اسرائیل کے خلاف سازش کررہا ہے ۔ مورڈی چائی نے کہا کہ وہ آگ سے کھیل رہے ہیں ۔ غزہ کے شہریوں کو اس کی قیمت چکانی ہوگی ۔ فلسطین کی مفاہمت کی کوششیں اور پورے علاقہ کا استحکام خطرہ میں پڑجائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات بالکل واضح ہے کہ اسلامی جہاد کا کوئی بھی حملہ پر سخت ردعمل ظاہر کیا جائے گا اور حملہ کی صورت میں اسرائیل کے پختہ ارادہ کا اظہار ہوجائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ صرف اسلامی جہاد پر ہی منحصر نہیں ہے بلکہ حماس کیلئے بھی مساوی طور پر ایک انتباہ ہے ۔ حماس غزہ پٹی پر حکمراں ہیں ۔ مورڈی چائی نے دمشق میں قائم اسلامی جہاد کی قیادت کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہم صورتحال پر قابو پاچکے ہیں ۔ رمضان صلاح اور زیاد نخالیہ کا نام لیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ وہ افراد ہیں جنہیں کسی بھی حملے کیلئے جواب دہ قرار دیا جائے گا ۔ اسرائیل نے کہا کہ اس کے پاس پانچ عسکریت پسندوں کی نعشیں ہیں جنہیں سرنگ سے برآمد کیا گیا ہے اور وہ انہیں سودے بازی کیلئے استعمال کرنے کا کوئی منصوبہ نہیں رکھتا ۔ حماس کے قبضہ میں اسرائیلی فوجیوں کی باقیات ہیں ۔ دو اسرائیلی شہری ذہنی عدم توازن کے شکار ہیں اور غزہ میں داخل ہوکر حماس کے قیدی بن گئے ہیں ۔ بالواسطہ مذاکرات کے نتیجہ میں 2011کا معاہدہ طئے پایا تھا جس کے تحت اسرائیل نے 1000 سے زیادہ فلسطینی قیدی اپنے فوجی گلاڈ شالک کے بدلے آزاد کئے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT