Tuesday , September 25 2018
Home / اضلاع کی خبریں / انجمن ترقی اردو گلبرگہ کا تعزیتی اجلاس

انجمن ترقی اردو گلبرگہ کا تعزیتی اجلاس

گلبرگہ ۔14نومبر ( فیکس) انجمن ترقی اردو گلبرگہ کی مجلس عاملہ کا ایک اجلاس خواجہ بندہ نوازؒ ایوان اردو پروفیسر محمد عبدالکریم کاظمی سابق پرنسپال گورنمنٹ ڈگری کالج گلبرگہ ‘ ڈاکٹر عبدالرحیم افضل پوری سابق لکچرر ایم ایس آئی ڈگری کالج گلبرگہ کے سانحہح ارتحال پر تعزیت پیش کرنے کیلئے منعقد ہوا جس کی صدارت صدر انجمن جناب ولی احمد نے فرمائ

گلبرگہ ۔14نومبر ( فیکس) انجمن ترقی اردو گلبرگہ کی مجلس عاملہ کا ایک اجلاس خواجہ بندہ نوازؒ ایوان اردو پروفیسر محمد عبدالکریم کاظمی سابق پرنسپال گورنمنٹ ڈگری کالج گلبرگہ ‘ ڈاکٹر عبدالرحیم افضل پوری سابق لکچرر ایم ایس آئی ڈگری کالج گلبرگہ کے سانحہح ارتحال پر تعزیت پیش کرنے کیلئے منعقد ہوا جس کی صدارت صدر انجمن جناب ولی احمد نے فرمائی ۔ ارکان عاملہ نے ہر دو شخصیتوں کی ادبی و تعلیمی خدمات کا جائزہ لیتے ہوئے انہیں زبردست خراج عقیدت پیش کیا ۔ اجلاس کا آغاز پروفیسر عبدالحمید اکبر صدر شعبہ اردو جامعہ گلبرگہ کی قرات کلام پاک سے ہوا ‘ بعد ازاں جناب خواجہ پاشاہ انعامدار ( نائب صدر انجمن) نے اپنے حرف آغاز میں کہا کہ ڈاکٹر عبدالرحیم افضل پوری انجمن ترقی اردو گلبرگہ کے حیاتی رکن تھے ۔ انہوں نے ایم ایس آئی ڈگری کالج میں بحیثیت لکچرر اردو نمایاں خدمات انجام دیں ‘ انہیں ادب کے علاوہ تاریخ سے بھی گہرا شفف تھا ۔ پروفیسر محمد عبدالکریم کاظمی کو انہوں نے فلسفی ‘ ادبی و دانشور قرار دیا اور کہا کہ بحیثیت مقرر بھی وہ خاص و عام میں مقبول تھے ۔ ڈاکٹر وہاب عندلیب نے کہا کہ اس وقت وہ گومگوکی حالت میںہیں ۔ مرحومین میں سے ایک اُن کے شاگر اور دوسرے استاد تھے ۔ مرحوم عبدالرحیم افضل پوری ملٹی پرپز ہائی اسکول میں گیارھویں جماعت میں ان کے طالب علم تھے ۔ اس دور سے ہی وہ نہایت سنجیدہ متین اور بُردبار تھے ۔ ان کا شمار جماعت کے اچھے طالب علموں میںہوتا تھا ۔ ڈاکٹر عندلیب نے کہا کہ وہ گلبرگہ میں پروفیسر محمد عبدالکریم کاظمی کے پہلے بیاچ کے اسٹوڈنٹ تھے ۔ فلسفہ نفسیات اور ادب پر ان کے غیر معمولی مطالعہ سے فیض یاب ہوتے رہے ۔پروفیسر کاظمی صاحب گلبرگہ کی علمی ادبی محافل کے مستقل صدر ہوا کرتے ‘ہندوستان کے علاوہ انہوں نے امریکہ یونیورسٹی میں بھی فلسفہ اور نفسیات پر کئی توسیع لکچرر دیئے ۔ پروفیسر حمید سہروردی نے کہا کہ پروفیسر کاظمی ایک فلسفی معلم اور دانشور تھے وہ مشرقی اور مغرب افکار سے خوب واقف تھے ۔ پروفیسر کاظمی علامہ اقبال کو بہت پسندکرتے تھے اور ان کے افکار پر ان کی تقاریر نہایت متاثر کن ہوتیں ۔ معتمد تنظیمی اُمور جناب میر شاہ نواز شاہین نے حسب ذیل قرارداد تعزیت پیش کی ۔ قرارداد تعزیت ’’ انجمن ترقی اردو گلبرگہ کی مجلس عاملہ کا اجلاس گلبرگہ کی دو اہم علمی و ادبی شخصیتوں ڈاکٹرعبدالرحیم افضل پوری حیاتی رکن انجمن اور پروفیسر عبدالکریم کاظمی سابق پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج گلبرگہ کے انتقال پر اپنے گہرے رنج و ملال کا اظہار کرتا ہے ۔ڈاکٹر عبدالرحیم افضل پورہ عثمانیہ یونیورسٹی حیدرآباد سے ایم اے کیا اور بعد ازاں ایم فل اور پی ایچ ڈی کی تکمیل کی ‘ انہیں درس و تدریس کے علاوہ ادب اور تاریخ سے گہری دلچسپی تھی ۔ علامہ اقبال سے بھی انہیں گہری عقیدت تھی ۔ اقبال کے فلسفہ خودی اور تاریخ کے اہم موضوعات پر ان کا مطالعہ وسیع تھا ۔ 11اکٹوبر 2014ء کو وہ ہمیشہ کیلئے ہم سے بچھڑ گئے ۔پروفیسر کاظمی 1948ء میں فلسفہ میں پوسٹ گریجوشن کے بعد گورنمنٹ ڈگری کالج گلبرگہ میں بحیثیت لکچرر اپنی تدریسی خدمات کا آغاز کیا اور 1982ء تک بحیثیت پرنسپل و پروفیسر خدمت انجام دی ‘ وظیفہ یابی کے بعد 25سال تک خواجہ ایجوکیشن سوسائٹی کے اعزازی معتمد رہے ۔ مارچ 2007ء میں حضرت سید شاہ محمد محمدالحسینی سجادہ نشین بارگاہ بندہ نوازؒ کے وصال پر اپنے عہدہ سے مستعفی ہوئے ۔ اس عظیم ہستی نے 27اکٹوبر 2014ء بروز پیر اس دارفانی سے کوچ کیا ۔ انجمن ترقی اردو گلبرگہ کی مجلس عاملہ کا یہ اجلاس ہر دو شخصیتوں کے سانحہ ارتحال پر رنج و لال کا اظہار کرتے ہوئے دعاگو ہے کہ وہ ان دونوں شخصیتوں کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا کرے ۔ ( آمین )

Top Stories

TOPPOPULARRECENT