Wednesday , December 12 2018

انجینئرنگ طالبہ پر قاتلانہ حملے کے بعدجنونی عاشق کی خودکشی

حیدرآباد ۔ 13 اکٹوبر ۔ ( سیاست نیوز) ایک انجینئرنگ کالج کی طالبہ پر جنونی عاشق کے قاتلانہ حملہ سے سنسنی پھیل گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ جنونی عاشق نے کالج احاطہ میں 19 سالہ روالی پر تیز دھار ہتھیار سے حملہ کردیا اور حملہ کے فوری بعد خودکشی کرلی۔ تاہم لڑکی کو بچالیا گیا ہے جبکہ خود حملہ آور جنونی عاشق فوت ہوگیا جس نے نامعلوم زہریلی دوا کا اس

حیدرآباد ۔ 13 اکٹوبر ۔ ( سیاست نیوز) ایک انجینئرنگ کالج کی طالبہ پر جنونی عاشق کے قاتلانہ حملہ سے سنسنی پھیل گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ جنونی عاشق نے کالج احاطہ میں 19 سالہ روالی پر تیز دھار ہتھیار سے حملہ کردیا اور حملہ کے فوری بعد خودکشی کرلی۔ تاہم لڑکی کو بچالیا گیا ہے جبکہ خود حملہ آور جنونی عاشق فوت ہوگیا جس نے نامعلوم زہریلی دوا کا استعمال کرلیا ۔ یہ واقعہ شہر کے نواحی علاقہ بنڈلہ گوڑہ میں آج صبح پیش آیا ۔ چندرائن گٹہ پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ لڑکا اور لڑکی روالی اور پردیپ ایک ہی علاقہ مشیرآباد رام نگر کے ساکنان تھے ۔ لیکن دونوں علحدہ مقامات پر زیرتعلیم تھے ۔ لڑکی ارورا کالج کی طالبہ تھی جبکہ پردیپ کوئی ٹکنیکل تعلیم سے وابستہ تھا۔ گزشتہ تین ماہ سے پردیپ راولی کو محبت کا اقرار کرنے کیلئے تنگ کررہا تھا ۔ شائد لڑکی اس بات کو پسند نہیں کرتی تھی ۔ پولیس اس معاملہ کی تحقیقات میں مصروف ہے ۔ آج لڑکی روزانہ کے معمول کی طرح کالج بس میں اپنے کالج واقعہ بنڈلہ گوڑہ پہونچی تو پردیپ پہلے سے کالج کے احاطہ میں موجود تھا اور لڑکی کے بس سے اُترنے کے انتظار میں تھا۔ وہ اپنے ساتھ تیز دھار ہتھیار اپنی محبوبہ کیلئے اور نامعلوم زہر خود اپنے لئے لیکر منصوبہ بند طریقہ سے آیا تھا ۔ جیسے ہی راولی اپنی کالج بس سے اُتری سینکڑوں طلبہ کی موجودگی میں جنونی پردیپ اپنی محبوبہ کو دیکھ کر بے قابو ہوگیااور فوری تیز دھار ہتھیار کے ساتھ اُس پر ٹوٹ پڑا ۔ اس حملہ میں راولی کے ہاتھ اور گردن پر گہرے زخم آئے ہیں لیکن اُس کی حالت خطرہ سے باہر بتائی گئی ہے جبکہ جنونی عاشق جس نے نامعلوم زہریلی دوا کااستعمال کیا تھا دواخانہ میں علاج کے دوران فوت ہوگیا۔ پولیس چندرائن گٹہ مصروف تحقیقات ہے ۔

TOPPOPULARRECENT