Wednesday , December 12 2018

انجینئرنگ کالجس میں آج سے ویب کونسلنگ

جے این ٹی یو کی اجازت سے محروم کالجوں کو ہائیکورٹ سے راحت

جے این ٹی یو کی اجازت سے محروم کالجوں کو ہائیکورٹ سے راحت
حیدرآباد ۔ 7 ۔ جولائی (سیاست نیوز) ریاست میں موجود جن انجنیئرنگ کالجس کو جواہر لال نہرو ٹکنالوجیکل یونیورسٹی کی جانب سے داخلے حاصل کرنے کی اجازت فراہم نہیں کی گئی تھی، انہیں ہائیکورٹ میں بڑی راحت حاصل ہوئی ہے اور ہائیکورٹ میں جسٹس اے راما لنگیشورا راؤ نے آج اہم فیصلہ سناتے ہوئے ہائیکورٹ سے رجوع ہونے والے کالجس کو کونسلنگ کی فہرست میں شامل کرنے کی ہدایت جاری کی ہے ۔ تعلیمی سال 2015-16 ء کیلئے انجنیئرنگ میں داخلوں کے عمل کا آغاز 8 جولائی سے ہونے جارہا ہے اور 8 جولائی سے ویب کونسلنگ شروع ہوجائے گی۔ جے این ٹی یو کی جانب سے گزشتہ دنوں منظورہ کالجس کی فہرست جاری کرتے ہوئے 25 کالجس کو داخلوں کے حصول کی اجازت فراہم نہیں کی تھی اور ان کی درخواستوں کو مسترد کرتے ہوئے یہ استدلال پیش کیا گیا تھا کہ کالجس میں درکار تدریسی عملہ و سہولتیں دستیاب نہیں ہیں لیکن خانگی کالجس کے ذمہ داران جو سابق میں عدلیہ سے رجوع ہوتے ہوئے انہیں عدالت نے اس بات کی راحت دے رکھی تھی کہ اگر جے این ٹی یو کی جانب سے اجازت فراہم نہیں کی جاتی ہے تو وہ دوبارہ عدالت سے رجوع ہوسکتے ہیں۔ جے این ٹی یو کی فہرست کی اجرائی کے بعد بیشتر کالجس کے ذمہ داران نے عدالت سے رجوع ہوتے ہوئے اپنا استدلال پیش کیا اور کہا کہ آل انڈیا کونسل فار ٹکنیکل ایجوکیشن کی جانب سے دیئے گئے رہنمایانہ خطوط و قواعد کے اعتبار سے کالجس اپنے معیار کو بہتر سے بہتر بنا رہے ہیں لیکن یونیورسٹی کی جانب سے مداخلت بیجا کی جانب سے قومی کونسل برائے تکنیکی تعلیم کے اصولوںکی خلاف ورزی کی جارہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT