Saturday , June 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / اندرا کرن ریڈی سیکولرزم کے علمبردار

اندرا کرن ریڈی سیکولرزم کے علمبردار

نرمل23 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نویز ) محمد ظہیرالدین سابق رکن بلدیہ محمد واجد احمد خان سابق نائب صدر نشین بلدیہ شاہد کمال سابق رکن بلدیہ نے اپنے ایک بیان میں نرمل حلقہ اسمبلی کے رائے دہندوں سے پرزور اپیل کی کہ وہ سیکورالزم کے علمبردار ایک تجربہ کار سیاستدان مسٹر اے اندرا کرن ریڈی کو بھاری اکثریت سے کامیاب کریں ۔ مسٹر اندرا کرن ریڈی حلقہ

نرمل23 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نویز ) محمد ظہیرالدین سابق رکن بلدیہ محمد واجد احمد خان سابق نائب صدر نشین بلدیہ شاہد کمال سابق رکن بلدیہ نے اپنے ایک بیان میں نرمل حلقہ اسمبلی کے رائے دہندوں سے پرزور اپیل کی کہ وہ سیکورالزم کے علمبردار ایک تجربہ کار سیاستدان مسٹر اے اندرا کرن ریڈی کو بھاری اکثریت سے کامیاب کریں ۔ مسٹر اندرا کرن ریڈی حلقہ اسمبلی نرمل سے بی ایس پی کے امیدوار ہیں ۔مسٹر ریڈی کے ہمراہ پارٹی کارکنوں اور ان قائدین کے ساتھ مسٹر اے اندرا کرن ریڈی گھر گھر پہونچکر رائے دہندوں سے انہیں کامیاب بنانے کی اپیل کر رہے ہیں ۔ واضح رہے کہ مسٹر این اندرا کرن ریڈی سابق میں دو مرتبہ ایم پی ایک مرتبہ ضلع پریشد چیرمین اور دو مرتبہ رکن حلقہ اسمبلی نرمل رہے ہیں ۔ ان کی عوامی مقبولیت سیاسی حلقوں میں بہت زیادہ ہے جبکہ مسٹر ریڈی لمحہ آخر تک کانگریس کے ٹکٹ کیلئے کوشاں تھے ۔ تاہم ان کے حامیوں کی جانب سے زبردست دباؤ کے نتیجہ میں مسٹر ریڈی نے بی ایس پی سے اپنی امیدواری کا اعلان کیا ۔ آج تمام طبقات کی جانب سے انہیں تائید حاصل ہو رہی ہے ۔ اقلیتی قائدین ان کی کامیابی کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگارہے ہیں ۔ مسٹر واجد احمد خان ، محمد ظہیرالدین ،مسٹر شاہد کمال نے کہا کہ مسٹر اے اندرا کرن ریڈی 2000 میں جب چالیس سے زائد اراکین اسمبلی کے ہمراہ دہلی پہونچکر سونیا گاندھی کو علحدہ تلنگانہ یادداشت پیش کی تھی جبکہ ان کی سیاسی زندگی میں 2004 کے انتخابات میں شاندار کامیابی کے باوجود انہیں وزارت سے اس لئے محروم کردیا گیا تھا کہ وہ تلنگانہ کے حامی تھے عوام کی بے پناہ محبت کے نتیجہ میں مسٹر ریڈی نے بی ایس پی سے مقابلہ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہم تمام رائے دہندوں بالخصوص مسلم بھائیوں ، بہنوں ، بزرگوں دوستوں سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ مسٹر اے اندرا کرن ریڈی کو بھاری اکثریت سے منتخب کریں ۔

TOPPOPULARRECENT