Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / اندرون ایک ہفتہ ائمہ اور مؤذنین کے بقایہ جات کی اجر ائی

اندرون ایک ہفتہ ائمہ اور مؤذنین کے بقایہ جات کی اجر ائی

عہدیداروں کو محمد سلیم کی ہدایت، 9 ماہ سے اعزازیہ کی عدم اجرائی پر برہمی

حیدرآباد۔20 مارچ (سیاست نیوز) گزشتہ 9 ماہ سے ماہانہ اعزازیہ کے منتظر تلنگانہ کے ائیمہ و موذنین کے لیے اچھی خبر یہ ہے کہ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے اندرون ایک ہفتہ تمام بقایا جات کی ادائیگی کا حکم دیا ہے۔ انہوں نے چیف ایگزیکٹیو آفیسر منان فاروقی اور دیگر عہدیداروں کے ساتھ اس سلسلہ میں اجلاس منعقد کیا اور عہدیداروں پر برہمی ظاہر کی کہ گزشتہ 9 ماہ سے ائیمہ اور موذنین ماہانہ اعزازیہ کے منتظر ہیں۔ انہوں نے ائیمہ اور موذنین کے سیکشن میں ملازمین کی تعداد میں اضافہ اور زائد کمپیوٹرس نصب کرنے کی ہدایت دی تاکہ تمام زیر التوا درخواستوں کیلئے آن لائین رقومات جاری کردی جائیں۔ واضح رہے کہ ریاست میں 9 ہزار سے زائد ائیمہ اور موذنین کو ہزاروں روپئے کے بقایا جات ادا نہیں کیے گئے۔ شہر میں ستمبر 2017ء جبکہ اضلاع میں جولائی 2017ء سے ادائیگی باقی ہے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ اسٹاف کی کمی سے درخواستوں کی جانچ میں تاخیر ہورہی ہے اسکے علاوہ ائیمہ اور موذنین کے اکائونٹس بھی متعلقہ ضلع میں کھولنے ہدایت دی گئی ہے۔ عہدیداروں نے کہا کہ جاریہ سال مارچ تک ادائیگی کی تیاری کرلی گئی ہے اور اسٹاف الاٹمنٹ کے ساتھ ہی رقومات کی اجرائی کا آغاز ہوگا۔ واضح رہے کہ 31 مارچ 2017ء تک ائیمہ اور موذنین کو ماہانہ ایک ہزار روپئے ادا کیئے جاتے تھے جبکہ اپریل 2017ء سے اس رقم کو بڑھاکر 1500 روپئے کیا گیا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ اندرون ایک ہفتہ تمام درخواستوں کی یکسوئی کردی جائے اور نئی درخواستوں کی جانچ کا کام شروع ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اسکیمات پر عمل آوری میں لاپرواہی کو برداشت نہیں کیا جائیگا۔

TOPPOPULARRECENT