Monday , November 19 2018
Home / شہر کی خبریں / اندھراپردیش کی خبریں

اندھراپردیش کی خبریں

آندھراپردیش میں بیک وقت 16 آئی ٹی کمپنیوں کا افتتاح
امراوتی کو ہائی ٹیک سٹی کے طرز پر ترقی دینے کا عزم ، کے نارالوکیش نائیڈو
حیدرآباد ۔ /17 جنوری (سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی حکومت آندھراپردیش مسٹر این لوکیش نے کہا کہ سال 2019ء کے اختتام سے قبل تک ریاست میں ایک لاکھ آئی ٹی ملازمتیں فراہم کرنے کے مقصد سے ہی حکومت کام کررہی ہے ۔ ریاستی راجدھانی امراوتی کو کامیاب بنانے کیلئے یہیں پر ہر ایک کو ملازمتوں کے مواقع فراہم کئے جانے چاہئیے ۔ ریاستی راجدھانی کے قریب واقع منگل گیری میں ایک ساتھ (16) آئی ٹی کمپنیوں کا افتتاح کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ آندھرا علاقہ کو اتنی زیادہ آئی ٹی کمپنیاں آنے کا کسی کے خواب و گمان میں بھی نہیں تھا اور کوئی سوچے بھی نہیں تھے ۔ انہوں نے کہا کہ آندھرا کو آئی ٹی کمپنیاں کیوں آنا چاہتے ۔ آندھرا میں کیا اہمیت پائی جاتی ہے ۔ اس طرح کی باتیں اور سوالات سابق میں بعض افراد نے کئے تھے ۔ آندھراپردیش میں چاقو جیسی تیز دھار والی لڑکیاں اور لڑکے پائے جاتے ہیں اور وہ ایک مرتبہ اپنا کوئی فیصلہ کرلینے پر ایک طریقہ کے ساتھ رہنے کا اظہار کرتے ہیں ۔ وزیر نے کہا کہ انتہائی اہم انفارمیشن ٹکنالوجی کمپنیوں کے اہم عہدوں پر تلگو والے ہی فائز ہیں اسی طرح دنیا بھر میں کہیں بھی دیکھیں گے تو تلگو والے ہی دکھائی دیں گے ۔ مسٹر لوکیش نے مزید کہا کہ راجدھانی کی تعمیر عالمی معیار کی ہونی چاہئیے اور اس عالمی معیار کے برابر تعمیر کو یقینی بنانے کیلئے چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو تیز تر اقدامات کررہے ہیں ۔ علاوہ ازیں راجدھانی کو انتہائی خوبصورت و دلکش شہر میں تبدیل کرنے پر چیف منسٹر توجہ دے رہے ہیں ۔ امراوتی راجدھانی کے علاقہ منگل گیری کو ’’ہائی ٹیک سٹی کے طور پر ترقی دینے حکومت کے ایکشن پلان کو ایک ساتھ 16 آئی ٹی کمپنیوں کا قیام عمل میں لاتے ہوئے عملی جامہ پہنایا جاسکا ۔ اس طرح منگل گیری این ٹی آر ٹیک پارک (13) اور آٹو نگر میں (3) آئی ٹی پارکس اس طرح جملہ (16) آئی ٹی کمپنیوں کا ایک ساتھ قیام عمل میں لاتے ہوئے افتتاح کیا گیا ۔ کمپنیوں کے قیام سے افراد کو روزگار فراہم ہوگا اور اندرون ایک سال ان کمپنیوں کے ذریعہ مزید (1600) بے روزگار افراد کو ملازمتیں فراہم ہوسکیں گی ۔ پیشہ ورانہ کورسیس کی تکمیل کرنے والے نوجوانوں کو ملازمتوں کیلئے کسی اور علاقوں یا مقامات کو روانہ ہونے کی ضرورت نہیں رہے گی ۔ منگل گیری آٹو نگر آئی ٹی پارک میں اب تک ہی (3) بڑی آئی ٹی کمپنیاں اپنی سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں اور ان کمپنیوں میں فی الوقت (500) افراد اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ مسٹر لوکیش نے کہا کہ جس طرح حیدرآباد کو ہائی ٹیک سٹی کے نام سے شہرت حاصل ہے اسی طرح سے منگل گیری میں واقع آئی ٹی علاقہ بھی ’’ہائی ٹیک سٹی ‘‘ کے طور پر تیز رفتار ترقی حاصل کرے گا ۔ اس افتتاحی تقریب سے مسٹر وی روی چیف ایکزیکٹیو آفیسر اے پی این آر ٹی نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پر کئی اعلیٰ عہدیدار و صنعتکار بھی موجود تھے ۔

وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ایک اور قائد مستعفی
تلگودیشم میں شمولیت کا فیصلہ ، عنقریب چندرا بابو سے ملاقات
حیدرآباد ۔ /17 جنوری (سیاست نیوز) آندھراپردیش وجئے واڑہ کے سابق رکن اسمبلی وائی ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر وی رادھا کرشنا نے وائی ایس آر کانگریس پارٹی سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے اور چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی واپسی پر /23 یا /24 جنوری کو تلگودیشم پارٹی میں شامل ہونے کی تیاریاں مکمل کرلی ہیں ۔ اس طرح وائی ایس آر کانگریس پارٹی سے ایک کے بعد دیگرے پارٹی سے استعفی دے کر تلگودیشم پارٹی میں شمولیت اختیار کرلینے کا سلسلہ جاری ہے ۔ ایکطرف پارٹی کو مضبوط و مستحکم بناتے ہوئے اقتدار کے حصول کا اہم مقصد رکھتے ہوئے صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی و قائد اپوزیشن آندھراپردیش قانون ساز اسمبلی مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی اپنی کوشش میں مصروف ہیں تو دوسری طرف پارٹی کے اہم قائدین بشمول ارکان اسمبلی بھی وائی ایس آر کانگریس پارٹی کو خیرباد کرکے تلگودیشم پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے کو ترجیح دے رہے ہیں ۔ اس طرح اب تک وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے (22) ارکان اسمبلی صدر پارٹی جگن موہن ریڈی کے رویہ سے عاجز آکر تلگودیشم میں شمولیت اختیار کرچکے ہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ وجئے واڑہ سے تعلق رکھنے والے وائی ایس آر کانگریس پارٹی قائد مسٹر گوتم ریڈی سے مسٹر ونگاویٹی رادھا کرشنا کے ساتھ جب معمولی اختلافات پیدا ہونے پر وائی ایس آر کانگریس پارٹی کا انہیں (وی ۔ رادھا کرشناکر) کوئی تعاون حاصل نہیں ہوا ۔ جس سے انہیں کافی دکھ و مایوسی سے دوچار ہونا پڑا اور اسی وجہ سے مسٹر وی رادھا کرشنا نے وائی ایس آر کانگریس پارٹی سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے ۔
چیف منسٹر آندھراپردیش کا دورہ داوس
عالمی کانفرنس میں شرکت ، بیرونی افراد کو سرمایہ کاری کی ترغیبات
حیدرآباد ۔ /17 جنوری (سیاست نیوز) چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو توقع ہے کہ /21 تا /25 جنوری ’’داوس‘‘ کے دورہ پر روانہ ہوں گے ۔ ذرائع نے یہ بات بتائی اور کہا کہ چندرا بابو نائیڈو کی زیرقیادت وفد’’داوس‘‘ میں منعقد ہونے والی عالمی مالیاتی کانفرنس میں شرکت کرے گا ۔ عالمی کانفرنس کے موقع پر چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو ریاست میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کی ترغیب دینے کے اہم مقصد سے ہی کانفرنس میں شرکت کررہے ہیں ۔ علاوہ ازیں آندھراپردیش میں سرمایہ کاری کیلئے سازگار ماحول پائے جانے سے متعلق چیف منسٹر داوس میں بڑے پیمانے پر تشہیری مہم چلائیں گے اور ممکنہ حد تک ریاست میں سرمایہ کاری کو یقینی بنانے کیلئے اپنی کوشش کریں گے ۔ سمجھا جاتا ہے کہ چیف منسٹر /26 جنوری کو آندھراپردیش واپس ہوجائیں گے ۔

آندھراپردیش کابینہ کا اجلاس ملتوی
حیدرآباد ۔ /17 جنوری (سیاست نیوز) آندھراپردیش ریاستی کابینہ کا اجلاس جو کہ چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی صدارت میں منعقد ہونے والا تھا ملتوی کردیا گیا اور اب ریاستی کابینہ کا اجلاس /20 جنوری کو متوقع ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر جو کہ آج صبح وشاکھاپٹنم کے دورہ پر روانہ ہوئے اور پھر وہاں سے مسٹر چندرا بابو نائیڈو دہلی کیلئے روانہ ہوجائیں گے ۔ جس کی وجہ سے آج سہ پہر 3 بجے منعقد ہونے والا ریاستی کابینہ کا اجلاس ملتوی کردیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT