Saturday , December 15 2018

انسانوں اور جنوں کو عبادت کے لئے پیدا کیا گیا

مولائے رحیم نے انسا نوں اور جنوں کو اپنی عبا دت کے لیے پیدا فر ما یا ارشاد با ری تعا لیٰ ہے: ’’اور میںنے جن اور آد می اس لئے بنا ئے کہ میر ی بندگی کریں،میں ان سے کچھ ر ز ق نہیں ما نگتا اورنہ یہ چا ہتا ہوں کہ وہ مجھے کھا نا دیں، بے شک اللہ ہی بڑا رزق دینے والا قوت والا قد رت والا ہے‘‘ ۔ (کنزالایمان) حضرت عبداللہ ابن مسعود رضی اللہ عنہ فرما تے ہیں مجھ سے رسول  ﷺ نے فرمایا اللہ نے اپنے بندوں کو بندگی(عبادت) کے لیے پیدا کیا ہے اب اس کی عبادت یکسو ئی کے ساتھ جو بجا لائے گا،کسی کو اس کا شریک نہ کرے گااسے پوری جزا عنایت فر مائے گا۔اور جواس کی نافر ما نی یعنی عبا دت میں کو تا ہی کرے گا وبدترین سزا ئیں بھگتے گا(ابو دائود، تر مذی)
مسند احمد میں حدیث قدسی ہے کہ اے ابن آدم! میری عبا دت کے لیے فارغ ہو جا ، میں ترا سینہ تونگری اور بے نیا زی سے پر کر دوں گا اگر تو نے ایسا نہ کیا تو میں تیرے سینے کو اشغال (کام) سے بھر دوں گااور تیری فقیر ی (تنگد ستی)کو ہرگز بند نہ کروں گا ۔( مسنداحمد، تر مذی،ابن ما جہ)
آقا  ﷺ نے فر مایا: رحمن کی عبادت کرو ،اور سلام کو عام کرو راوی عبداللہ بن عمررضی اللہ عنہما کہتے ہیں معقول بن سیا رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ رسول ﷺ نے فر ما یا: فتنوں( کے ) ایام میں عبادت کر ناایسا ہی ہے جیسے میری طرف ہجرت کرنا(ابن ما جہ)یہ فتنوں کادور ہے ایسے میںہر مو من کوعبا دت الٰہی پر خاص توجہ دینا چا ہئے۔ عبادت کے لئے کچھ خاص اوقات بھی ہیں جن میں عبا دت کرنے کا ثواب بڑھ جا تا ہے جیسے رمضان المبا رک جس کی فضیلت قر آن کریم واحادیث پاک میںآئی ہیں نفل کا ثواب فرض کے برابر ایک نیکی کاثواب ستر گنا یا اس سے بھی زیا دہو جاتا ہے اللہ نے ہی تمام دن ورات اور مہینہ بنائے ہیں ان میں کچھ دنوں ،مہینوں کو بعض پر فضیلت بخشی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT