Tuesday , November 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / انسانیت کی خدمت کو اپنا پیشہ بنانے مسلمانوںسے خواہش

انسانیت کی خدمت کو اپنا پیشہ بنانے مسلمانوںسے خواہش

سوریا پیٹ۔17فبروری( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)ملک کے تمام طبقات و مذاہب کی ایکتا و یکجہتی سے ہی ملک کی ترقی ممکن ہے ۔ ان خیالات کا اظہار ملک کے نامور عالم دین جمعیت علماء ہند کے صف اول کے قائد مولانا متین الحق اسامہ جنرل سکریٹری جمعیت علماء یو پی و رکن قومی ورکنگ کمیٹی جمعیت علماء ہند نے کیا۔ کھمم میں جلسہ میں شرکت و خطاب کے بعد واپسی کے دوران سوریا پیٹ میں توقف کے دوران اردو ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کررہے تھے ۔ مولانا متین الحق اسامہ نے عدم رواداری کے مسئلہ پر دوٹوک انداز میں کہاکہ رواداری ‘ ایک دوسرے کا احترام اس ملک کی ایک منفرد شناخت اور شان ہے اور لوگ اسے ختم کر کے عدم رواداری کو فروغ دینا چاہتیہ یں وہ کسی ایک مذہب اور طبقہ کے نہیں بلکہ پورے ملک اورملک کے معماروں کے دشمن ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں مٹھی بھر فرقہ پرست لوگ ہیں جو ملک کے پرامن اور محبت بھر سے ماحول کو نفرت کے رنگ میں رنگنا چاہتے ہیں ہم سب کو ان کے خلاف متحدہ جدوجہد کرنا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ جمعیت العلماء اپنے اسلاف کی روایت کو آگے بڑھاتے ہوئے پورے ملک میں ایسی انسان اور ملک دشمن طاقتوں کے خلاف مہم چلارہی ہے اور انشاء اللہ جمعیت العلماء برادران وطن کو ساتھ لیکر اسے ملکر دشمن کے منصوبوں کو ناکام کرے گی ۔ انہوں نے اپنی گفتگو جاری رکھتے ہوئے کہا کہملک کا دستور بہت مضبوط ہے جس کو پوری دنیا میں منفرد مقام حاصل ہے ۔ ملک کی دستور سازی میں جمعیت العلماء اور مسلمانوں کا کلیدی کردار رہاہے ۔آج اس دستور کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کے منصوبے بنائے جارہے ہیں لیکن یہ منصوبہ اتنا آسان نہیں ۔ انہوں نے مرکزی حکومت کو چیلنج کیا کہ اگر ہمت ہو تو دستور کو چھیڑ کر دیکھیں ۔ مولانا متین الحق اسامہ نے علماء و مسلم نوجوانوں کی گرفتاری پر کہاکہ اس سے قبل بھی کانگریس حکومت میں کئی علماء اور سینکڑوں مسلم نوجوانوں کی گرفتاری ہوئی تھی اور جمعیت نے مقدمات کی کامیاب پیروی کی جس کی بدولت پانچ سا یا دس بارہ سال بعد عدالتوں نے انہیں باعزت بری کردیا ۔ انہوں نے اس سلسلہ میں میڈیاپر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ابھی عدالت میں پیش بھی نہیں کیا جاتا لیکن میڈیا ملزم کو مجرم اور آتنک واد اور ماسٹر مائنڈ قرار دے دیتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اصل سرغنہ اور ماسٹر مائنڈ میڈیا ہے جو ایک مخصوص لابیکے اشاروں پر کام کررہی ہے ۔ ایسے افراد کو اور ایسے عہدیداروں کو سزاء کا مطالبہ کیا جنہوں نے الزامات لگائے لیکن ثبوت پیش نہیں کرسکے اور عدالت نے بری کردیا ۔ مولانا متین الحق اسامہ نے امت مسلمہ کو پیغام دیا کہ دین کو نہ صرف اپنائیں بلکہ برادران وطن کو دین کی حقانیت اور اسلام کی خوبیوں سے واقف کرائیں ۔ انہوں نے نوجوانوں سے خواہش کی کہ لایعنی لغو کاموں کو چھوڑ کر حصول تعلیم میں دن رات محنت کریں اور اپنے اوئیاء اور اسلام کے طرز پر انسانیت کیخدمت کو اپنا پیشہ بناتے ہوئے ملک کی ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہوئے دشمنوں کو بھی اپنی صلاحیتوں کا معترف کریں ۔ اسموقع پر محمد رمضان مولانا شاہد ‘ حافظ خلیل احمد ‘ حافظ جواد احمد و دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT