Monday , September 24 2018
Home / دنیا / انسدادِ دہشت گردی کیلئے خفیہ نگرانی کے امریکی اختیارات ختم

انسدادِ دہشت گردی کیلئے خفیہ نگرانی کے امریکی اختیارات ختم

واشنگٹن ۔ یکم ؍ جون (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کی سینٹ میں اتفاقِ رائے نہ ہونے کے بعد دہشت گردی کے تدارک کے لیے شہریوں کے فون ریکارڈ کی خفیہ نگرانی کے قانونی اختیار کی میعاد ختم ہو گئی ہے۔ وائٹ ہاؤس نے اسے ’غیر ذمہ درانہ بھول‘ قرار دیا ہے۔خیال رہے کہ انسدادِ دہشت گردی کی ختم ہونے والی ان دفعات کے تحت سکیورٹی ایجنسیوں کو شہریوں کی فون کے اعداد و شمار کو اکٹھا کرنے کی اجازت حاصل تھی۔اتوار کی شب امریکی سینیٹرز نے امریکہ کے فریڈم ایکٹ پر بحث و مباحثہ بھی کیا کہ آیا اس میں توسیع کی جائے یا اس کی جگہ ایسا قانون لایا جائے جس میں کثیر تعداد میں فون کے اعداد و شمار اکٹھا کرنے کی اجازت نہ ہو۔ تاہم مقررہ وقت کے اندر کسی بھی ایک نقطے پر اتفاق رائے نہیں ہو سکا۔بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک معاملے پر جو اتنا ہی نازک ہے جتنی کہ ہماری قومی سلامتی، سینیٹرز کو اپنی جانبداری کو ایک جانب رکھنا چاہیے اور تیزی سے اقدام کرنا چاہیے۔ یہ بھی کہا گیا ہے کہ امریکی عوام اس سے کم کے حق دار نہیں۔اس سے قبل صدر براک اوباما نے متنبہ کیا تھا کہ اگر اس قانون کی میعاد ختم ہوئی تو امریکہ خطرے میں پڑ سکتا ہے۔شمالی امریکہ میں امکان ہے کہ آئندہ چند دنوں میں نیا قانون پاس ہو جائے گا تاہم اس میں تاخیر ریپبلکن اور صدارت کے لیے پرامید سینیٹر رینڈ پال کی کامیابی سمجھا جائے گا۔سینیٹر پال جو ریپبلیکن کی جانب سے صدارتی امیدوار بننے کی کوشش میں ہیں انھوں نے عہد کیا ہے کہ وہ اپنے اختیار میں اس نگرانی والے قانون کو روکنے یا اس میں تاخیر لانے کی ہر ممکنہ کوشش کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT