Thursday , January 18 2018
Home / ہندوستان / انشورنس ، کوئلہ آرڈیننس پر صدرجمہوریہ کے دستخط

انشورنس ، کوئلہ آرڈیننس پر صدرجمہوریہ کے دستخط

نئی دہلی ۔ 26 ڈسمبر ۔ (سیاست ڈاٹ کام ) صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے آج دو آرڈیننس پر دستخط کردیئے جس کے ساتھ ہی انشورنس کے شعبہ میں زائد بیرونی سرمایہ کاری اور کوئلہ کی منسوخ شدہ کانوں کی دوبارہ تخصیص کی راہ ہموار ہوگئی ہے ۔ حکومت نے ان دونوں شعبوں میں اصلاحات پر پیشرفت کیلئے آرڈیننس جاری کرنے کا فیصلہ کیا تھا کیونکہ یہ دونوں بلز منگل کو خ

نئی دہلی ۔ 26 ڈسمبر ۔ (سیاست ڈاٹ کام ) صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے آج دو آرڈیننس پر دستخط کردیئے جس کے ساتھ ہی انشورنس کے شعبہ میں زائد بیرونی سرمایہ کاری اور کوئلہ کی منسوخ شدہ کانوں کی دوبارہ تخصیص کی راہ ہموار ہوگئی ہے ۔ حکومت نے ان دونوں شعبوں میں اصلاحات پر پیشرفت کیلئے آرڈیننس جاری کرنے کا فیصلہ کیا تھا کیونکہ یہ دونوں بلز منگل کو ختم شدہ پارلیمانی اجلاس میں منظور نہیں کروائے جاسکے تھے ۔ صدرجمہوریہ کے پریس سکریٹری وینو راجہ منی نے کہاکہ ’’صدر نے دونوں آرڈیننس پر دستخط کردیئے ہیں‘‘ ۔ کابینہ نے پارلیمانی سرمایہ اجلاس کے اختتام کے ایک دن بعد چہارشنبہ کو انشورنس بل پر آرڈیننس جاری کیا تھا اور کوئلہ سے متعلق آرڈیننس دوبارہ جاری کیا گیا ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی نے اُمید ظاہر کی ہے کہ انشورنس شعبہ میں راست بیرونی سرمایہ کاری کی حد کو 26 فیصد سے بڑھاکر 49 فیصد کردینے سے اس شعبہ میں کی جانے والی بیرونی سرمایہ کاری میں چھ تا آٹھ ارب امریکی ڈالر کا اضافہ ہوگا ۔ مسٹر جیٹلی نے کہا تھا کہ یہ آرڈیننس ، مختلف شعبوں میں اصلاحات کے لئے حکومت کے پختہ عزم کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ اس اقدام نے نہ صرف ملک کے سرمایہ کاروں بلکہ ساری دنیا پر یہ واضح کردیا ہے کہ اگر پارلیمنٹ کے دو کے منجملہ ایک ایوان کی عدم منظوری پر بھی ہم اس منظوری کیلئے غیرمعینہ مدت تک انتظار کرتے نہیں بیٹھیں گے ‘‘ ۔ واضح رہے کہ جبری مذہبی تبدیلی اور دیگر مسائل پر راجیہ سبھا میں مسلسل ہنگامہ آرائی کے سبب اس ایوان کے منتخب کمیٹی کی طرف سے انشورنس قوانین ترمیمی بل 2008 ء بحث کے لئے پیش نہیں کی جاسکی تھی ۔ کوئلہ کی کانوں پر (خصوصی قواعد) بل 2014 ء لوک سبھا میں پہلے ہی منظور کی جاچکی تھی لیکن ایوان بالا میں اس پر پیشرفت نہیں ہوسکی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT