Sunday , October 21 2018
Home / شہر کی خبریں / انضمام حیدرآباد کو سرکاری طور پر منانے سے انکار

انضمام حیدرآباد کو سرکاری طور پر منانے سے انکار

بی جے پی ارکان کو چیف منسٹر کا دو ٹوک جواب ، مسلمانوں کے جذبات کا احترام

حیدرآباد ۔ 14 ۔مارچ (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے حیدرآباد اسٹیٹ کے انڈین یونین میں انضمام کو سرکاری طور پر منانے بی جے پی کے مطالبہ کو مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا کہ انڈین یونین نے نظام حکومت کا انضمام ہوا تھا اور اسے یوم نجات نہیں کہا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر عوام میں اتفاق رائے نہیں ہے ۔ ٹی آر ایس ہر سال تلنگانہ بھون میں یوم انضمام کا اہتمام کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بعض افراد اسے یوم نجات اور بعض اسے یوم غداری قرار دیتے ہیں۔ چونکہ اس مسئلہ پر اتفاق رائے نہیں ہے ۔ حکومت عوام میں مزید اختلافات کو ہوا دینا نہیں چاہتی ۔ حکومت کی ترجیح ریاست اور اس کے عوام کی ترقی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مملکت آصفیہ کے انڈین یونین میں انضمام کو بی جے پی نے یوم نجات کا نام دیا ہے ۔ دراصل بادشاہی نظام سے حیدرآباد اسٹیٹ جمہوریت میں شامل ہوا، اسے نجات نہیں کہا جاسکتا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ عوام آپس میں محبت اور بھائی چارہ کے ساتھ زندگی بسر کر رہے ہیں، ایسے میں یوم نجات یا کسی اور عنوان سے عوام میں نفرت اور تفرقہ پیدا کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ۔ یوم نجات منانے کے پیچھے جو جذبہ کارفرما ہے، وہ دراصل مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرتا ہے۔ مسلمانوں اور مسلم حکمرانی سے نجات بی جے پی کا نظریہ ہے ۔ ہم کسی کے جذبات کو ٹھیس پہنچانا نہیں چاہتے۔ تلنگانہ تحریک کے دوران ٹی آر ایس نے یوم انضمام کو سرکاری طور پر بنانے کا مطالبہ کیا تھا لیکن اب جبکہ تلنگانہ ریاست تشکیل پاچکی ہے، ان تمام طبقات کو ساتھ لیکر چلنا چاہتے ہیں۔ کے سی آر نے کہا کہ تلنگانہ عوام کیلئے حقیقی یوم نجات 2 جون ہے۔ آندھرائی حکمرانوں سے تلنگانہ کو اس دن نجات ملی تھی۔ انہوں نے بی جے پی ارکان سے کہا کہ وہ 2 جون کو یوم نجات منائیں اور ٹی آر ایس اس کا خیرمقدم کرے گی۔ تلنگانہ سماج میں تمام مذاہب کو ساتھ رکھنا حکومت کی ذمہ داری ہے اور ہم کوئی تنازعہ پیدا کرنا نہیں چاہتے۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس سرکاری طور پر یوم نجات نہیں منائے گی۔ اگر بی جے پی کو اقتدار ملتا ہے اور وہ یوم نجات منائیں تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ بی جے پی رکن ڈاکٹر لکشمن نے کہا کہ نظام حیدرآباد کے خلاف جدوجہد میں مسلمانوں نے بھی حصہ لیا تھا۔ شعیب اللہ خاں ، طرہ باز خاں اور دیگر کئی مسلمان نظام کے خلاف جدوجہد میں شریک تھے ۔ بی جے پی مذہب کی بنیاد پر یوم نجات کا مطالبہ نہیں کر رہی ہے بلکہ وہ تاریخی حقیقت سے عوام کو واقف کرانا چاہتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT