Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / انقلابی گلوکار غدر 18 سال بعد بھی حصول انصاف سے محرومی پر اظہار حیرت

انقلابی گلوکار غدر 18 سال بعد بھی حصول انصاف سے محرومی پر اظہار حیرت

غدر کے ساتھ انصاف رسانی کے لیے جناب ظہیر الدین علی خاں کا حکومت سے مطالبہ ، کلچرل تنظیموں ، سماجی جہدکاروں اور دانشوروں کا احتجاجی جلسہ

غدر کے ساتھ انصاف رسانی کے لیے جناب ظہیر الدین علی خاں کا حکومت سے مطالبہ ، کلچرل تنظیموں ، سماجی جہدکاروں اور دانشوروں کا احتجاجی جلسہ
حیدرآباد۔6اپریل(سیاست نیوز) اٹھارہ سال قبل انقلابی گلوکار وشاعر غدر پر ہوئے قاتلانہ حملے کی جوڈیشیل تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے جناب ظہیر الدین علی خان نے کہاکہ سماجی جہدکاروں کے تئیں حکمران طبقے کا نظریہ ایک جیسا ہے خواہ حکمران طبقے کا تعلق کسی بھی سیاسی جماعت سے کیو ں نہ ہو۔ آج یہاں سندریا وگیان کیندرم‘ باغ لنگم پلی میں انقلابی گلوکار غدر پر اٹھارہ سال قبل ہوئے قاتلانہ حملے کے خلاف تلنگانہ حامی کلچرل تنظیموں‘ سماجی جہدکاروں اور دانشوروں کے اشتراک سے ایک احتجاجی پروگرام سے وہ مخاطب تھے سماجی جہدکار پشیم یادگیری نے اس احتجاجی جلسہ کی نگرانی کی جبکہ سی پی آئی ایم ریاستی سکریٹری تمنینی ویرا بھدرم‘ شریمتی ویملا اکا‘ مسٹر ایم ویدا کمار‘ایم ڈی غوث‘اوسا سامبا سیوا رائو‘کمار سوامی‘ ثنا ء اللہ خان‘ ساجد خان‘ اسلم عبدالرحمن‘ کوٹہ سرینواس‘ تروپتی یادیا‘ ملا ریڈی‘ جین ملیا گپتا‘ویملا ملیا اور دیگر بھی اس موقع پر موجود تھے۔ انقلابی گلوکار غدر نے اپنے روایتی انداز میںانقلابی گیت پیش کرتے ہوئے سامراجیت اور فرقہ پرستی کے خلاف تمام سکیولر طاقتوں کو متحد ہونے کی دعوت دی۔ اپنے سلسلے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے جناب ظہیر الدین علی خان نے اٹھارہ سال کے بعد بھی انقلابی گلوکار پر حملے کرنے والوں کے خلاف کارروائی سے گریز پر حیرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہاکہ حکمران طبقے پر ریاست کی تمام عوام کے ساتھ انصاف کرنے کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے مگر آندھرائی حکمرانوں نے جمہوریت کے عین خلاف کام کرتے ہوئے انقلابی گلوکار غدر پر حملے کرنے والوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی اور غدر آج بھی انصاف سے محروم ہیں۔انہوں نے غدر کے ساتھ انصاف کرنے اور خاطیو ں کو کیفردار کر تک پہنچانے کا حکومت تلنگانہ سے پرزور مطالبہ بھی کیا۔ جناب ظہیر الدین علی خان نے ایس سی‘ ایس ٹی‘ بی سی اور اقلیتی طبقات کے متحدہ پلیٹ فارم کو بھی وقت کی اہم ضرورت قراردیا۔ انہوں نے کہاکہ سنہری اور ساماجیکا تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے لئے ریاست کے تمام طبقات کے ساتھ حکمران طبقے کا یکساں سلوک ضروری ہے۔ احتجاجی جلسہ عام میں موجود مختلف سماجی ‘ سیاسی اور کلچرل تنظیموں سے وابستہ قائدین نے بھی انقلابی گلوکار غدر کو سامراجیت اور فرقہ پرستی کے خلاف چلائے جانے والی تحریکات کا علمبردار قائدقراردیتے ہوئے انقلابی گلوکار غدر کے ساتھ انصاف کرنے کا حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT