Friday , November 24 2017
Home / دنیا / انوپ چیتیا کی حوالگی ہند ۔ بنگلہ قریبی تعلقات کی عکاس

انوپ چیتیا کی حوالگی ہند ۔ بنگلہ قریبی تعلقات کی عکاس

ہندوستان کے ساتھ سکیوریٹی امور پر مستقبل میں بھی تعاون : وزیر داخلہ بنگلہ دیش کا بیان
ڈھاکہ 12 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بنگلہ دیش کے وزیر داخلہ اسد الزماں خاں کمل نے آج کہا کہ ان کے ملک کی جانب سے ہندوستان کو انتہائی مطلوب الفا لیڈر انوپ چیتیا کی حوالگی دونوں ملکوں کے مابین قریبی تعلقات کو ظاہر کرتی ہے ۔ خاص طور پر دونوںملکوں کے مابین سلامتی کے شعبہ میں تعلقات بہت قریبی ہیں۔ انہوں نے چیتیا کی ہندوستان کو حوالگی کے بعد کہا کہ بنگلہ دیش نے یہ ایک اچھا کام کیا ہے اور ہم ہندوستان کے ساتھ اس طرح کے مسائل پر مستقبل میں بھی کام کرنے کو تیار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ان کا ملک باہمی مفاد کے حامل شعبہ جات میں دونوں ملکوں کے مابین اشتراک کا خواہاں ہے ۔ گذشتہ 18 سال سے انوپ چیتیا بنگلہ دیش کی جیلوں میں قید تھا اور وہ ہندوستان میں انتہائی مطلوب ملزمین کی فہرست میں شامل تھا ۔ انوپ چیتیا کی حوالگی ایسے وقت میں عمل میں آئی ہے جبکہ چند ہی دن قبل انڈر ورلڈ ڈان چھوٹا راجن کو بالی میں گرفتار کرنے کے بعد ہندوستان لایا گیا ہے ۔ چیتیا کو ہندوستان کے حوالے کرنے سے قبل سلہٹ سرحدی علاقہ میں کسی نا معلوم مقام پر رکھا گیا تھا جسے بعد میں ہندوستانی حکام کے حوالے کردیا گیا ۔ اس سوال پر کہ آیا ڈھاکہ کو یہ امید ہے کہ اس طرح کے اقدامات کے جواب میں ہندوستان بھی بنگلہ دیش کے ساتھ دیرینہ حل طلب مسائل کی یکسوئی کریگا انہوں نے کہا کہ ہم اس حوالگی کے بدلے میں کچھ نہیں چاہتے ۔ کیونکہ یہ ہماری باہمی دوستی اور تعاون کی بنیادوں پر کیا گیا ہے اور خاص طور پر دونوں ملکوں کے مابین سکیوریٹی کے شعبہ میں تعلقات مستحکم ہیں۔ تاہم مقامی ذرائع ابلاغ میں وزیر داخلہ بنگلہ دیش کا یہ کہتے ہوئے حوالہ دیا گیا ہے کہ بنگلہ دیش کو گذشتہ سات سال سے مطلوب ملزم نور حسن کی حوالگی عمل میں آسکتی ہے جو فی الحال مغربی بنگال کی ایک جیل میں قید ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ جس طرح سے ہم نے انوپ چیتیا کو سرحد پر ہندوستان کے حوالے کیا تھا اسی طرح ہم نور حسن کو بھی ہندوستان سے سرحد پر حاصل کرینگے ۔ نور حسن پر بنگلہ دیش میں کچھ سنگین الزامات عائد کئے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT