Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / انٹرکے 240کالجس غیرمسلمہ ‘ طلبہ کی امتحانی فیس کے حصولسے انکار

انٹرکے 240کالجس غیرمسلمہ ‘ طلبہ کی امتحانی فیس کے حصولسے انکار

15اکٹوبر فیس داخل کرنے کی آخری تاریخ ‘ طلبہ اور سرپرست پریشان حال ‘ بورڈ کا سخت موقف
حیدرآباد۔25ستمبر(سیاست نیوز) انٹر میڈیٹ میں زیر تعلیم ہزاروں طلبہ کا مستقبل غیر یقینی صورتحال کا شکار بنا ہواہے اور کوئی آثار نہیں ہے کہ بورڈ آف انٹرمیڈیٹ کی جانب سے ان طلبہ کو راحت کی فراہمی کے اقدامات کئے جائیں۔ ریاست تلنگانہ میں 240ایسے خانگی کالجس ہیں جن کے طلبہ کی امتحانی فیس بورڈ آف انٹرمیڈیٹ نے قبول نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ ان غیر مسلمہ کالجس میں تعلیم حاصل کر رہے طلبہ کی فیس کی وصولی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کیونکہ بورڈ آف انٹرمیڈیٹ نے داخلوں کے عمل کے دوران ہی اعلامیہ جاری کرتے ہوئے طلبہ و سرپرستوں کے علاوہ کالجس کو بھی داخلوں کے معاملہ میں تحقیق کا مشورہ دیا تھا۔ بتایا جاتاہے کہ ریاست تلنگانہ میں حکومت اور محکمہ تعلیم و بورڈ آف انٹرمیڈیٹ کی جانب سے 240ایسے کالجس کی نشاندہی کی گئی ہے جنہیں مسلمہ حیثیت حاصل نہیں ہے لیکن اس کے باوجود ان کالجس میں داخلے فراہم کئے گئے ہیں اور کالجس کی جانب سے ان طلبہ کی امتحانی فیس دوسرے اسکولوں سے داخل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے جس میں کالج انتظامیہ کو ناکامی کا سامنا کرنا پڑے گا کیونکہ بورڈ آف انٹرمیڈیٹ نے تعلیمی سال کے آغاز کے چند یوم کے دوران ہی داخلوں کی تفصیل حاصل کرلی تھی ۔ انٹرمیڈیٹ امتحانی فیس کے ادخال کی آخری تاریخ 15اکٹوبر مقرر کی گئی ہے اور کوئی یہ نہیں کہہ سکتا ہے کہ ان 240خانگی انٹرمیڈیٹ کالجس کو 15اکٹوبر سے قبل مسلمہ حیثیت فراہم کردی جائے گی کیونکہ ان میں بیشتر جونئیر کالجس کی درخواستوں میں مختلف مسائل ہیں جنہیں اندرون 15تا20یوم حل کیا جانا ناممکن ہے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق کالج انتظامیہ کی جانب سے طلبہ اوراولیائے طلبہ کو یہ تاثر دینے کی کوشش کی جا رہی ہے کہ بورڈ آف انٹرمیڈیٹ کی جانب سے کی جانے والی تاخیر کے سبب یہ صورتحال پیدا ہو رہی ہے جبکہ بورڈ آف انٹر میڈیٹ کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ریاست تلنگانہ میں حکومت کی جانب سے تعلیم کی فراہمی کے عمل کو بہتر اور باقاعدہ بنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں اور ان اقدامات کے تحت ہی حکومت اور محکمہ تعلیم کی جانب سے غیر مسلمہ کالجس کے طلبہ کی فیس دیگر کالجس کے ذریعہ بھی قبول نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بتایا جاتاہے کہ اب تک کسی ایک ادارہ کے مختلف کالجس کے سبب وہ ادارہ اپنے کالجس کے طلبہ کی فیس جمع کروایا کرتا تھالیکن جاریہ تعلیمی سال بورڈ آف انٹرمیڈیٹ نے داخلہ حاصل کرنے والے طلبہ کی مکمل تفصیل قبل از وقت ہی حاصل کرلی ہے اور اس میں کوئی اضافہ کی گنجائش نہیں رکھی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT