Monday , October 22 2018
Home / شہر کی خبریں / انٹر طلبا کو گروپ یا میڈیم کی تبدیلی پر فیس کا لزوم

انٹر طلبا کو گروپ یا میڈیم کی تبدیلی پر فیس کا لزوم

گروپ کی تبدیلی پر 700 روپئے اور میڈیم کی تبدیلی پر 500 روپئے فیس ادا کرنی ہوگی
حیدرآباد 12 اگسٹ (سیاست نیوز) انٹرمیڈیٹ میں زیرتعلیم طلبہ اگر گروپ یا میڈیم تبدیل کرنا چاہتے ہوں تو انھیں اب سے فیس ادا کرنی پڑے گی۔ اگر طلبہ ایک گروپ سے دوسرے گروپ میں تبدیل ہونا چاہیں تو انٹر بورڈ کو 700 روپئے اور اگر میڈیم تبدیل کرنا چاہتے ہوں تو 500 روپئے فیس اداکرنی پڑے گی۔ واضح ہوکہ تاحال اس تبدیلی کے لئے کسی بھی طرح کی فیس وصول نہیں کی جاتی تھی مگر اب انٹر بورڈ عہدیداران نے فیس وصول کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور ہر سال تقریباً انٹر سال اول میں 4.5 لاکھ طلبہ و طالبات داخلے لیتے ہیں جن میں سے تقریباً 50 ہزار طلباء و طالبات گروپ یا میڈیم کی تبدیلی کرتے ہیں اور بورڈ کے اس فیصلہ سے گروپ یا میڈیم تبدیل کرنے والے طلباء و طالبات پر زائد مالی بوجھ عائد ہورہا ہے اور بورڈ کے فیصلہ پر ہر چہار جانب سے شدید تنقیدیں کی جارہی ہیں اور اندیشوں کا اظہار کیا جارہا ہے کہ اس فیصلہ سے غریب طلبہ و طالبات پر بہت زیادہ اثر پڑے گا۔ گزشتہ روز خانگی کالجس کے انتظامیہ اور وزراء کے منعقدہ اجلاس میں اس مسئلہ کو اُٹھایا گیا ہے اور اس اجلاس میں بورڈ عہدیداران کے فیصلہ پر وزیر جگدیش ریڈی شدید ناراضگی کا اظہار کرنے کی اطلاعات ہیں اور ریاستی وزیر جگدیش ریڈی نے کہاکہ حکومت فی ری امبرسمنٹ کے تحت 1760 روپئے طلبہ کو دیتی ہے تو اس میں سے 700 روپئے وصول کرنا کس حد تک درست ہے؟ خانگی کالجس انتظامیہ تنظیم کے سکریٹری گوری ستیش نے شدید اندیشوں کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ غریب طلبہ پر فیس ادائیگی لازمی کرنے سے مجبوراً ناپسندیدہ کورسیس کو جاری رکھنا پڑے گا جس سے طلبہ کی تعلیم اور صلاحیتوں پر بُرے اثرات مرتب ہوسکتے ہیں اور انھوں نے بورڈ عہدیداران سے پرزور مطالبہ کیاکہ غریب طلباء و طالبات کی معاشی حالت کو مدنظر رکھتے ہوئے فوری اثر کے ساتھ اس فیصلہ سے دستبرداری اختیار کی جائے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT