Wednesday , October 24 2018
Home / دنیا / انڈونیشیاء کی دو یونیورسٹیوں میں نقاب پہننے پر امتناع

انڈونیشیاء کی دو یونیورسٹیوں میں نقاب پہننے پر امتناع

یوگیاکارتہ ۔ 8 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) انڈونیشیاء کی دو اسلامی یونیورسٹیوں نے وہاں تعلیم حاصل کرنے والے طالبات کو نقاب کا استعمال نہ کرنے کی ہدایت کی ہے اور یہ انتباہ بھی دیا ہیکہ ہدایت پر عدم عمل آوری سے انہیں خارج کیا جاسکتا ہے۔ یاد رہیکہ دنیا کی سب سے زیادہ مسلم آبادی والے اس ملک میں حالیہ دنوں میں بنیاد پرستی میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ دریں اثناء سونن کالیجاگا یونیورسٹی نے جاریہ ہفتہ ایک فتویٰ جاری کرتے ہوئے یونیورسٹی میں زائد از تین درجن طالبات کیلئے نقاب نہ اوڑھنے کی ہدایت جاری کی ہے جس پر عمل آوری نہ کرنے پر انہیں یونیورسٹی سے خارج کیا جاسکتا ہے۔ حالانکہ سعودی عرب اور دیگر خلیجی ممالک میں نقاب کا استعال عام ہے تاہم سیکولر انڈونیشیاء میں اس نوعیت کے نقاب کا چلن عام نہیں ہے جہاں 260 ملین آبادی والے اس ملک کے 90 فیصد عوام اعتدال پسند اسلام پر عمل پیرا ہیں۔ انڈونیشیائی مسلمانوں کا کہنا ہیکہ مکمل نقاب جس میں صرف آنکھوں کی جانب دو سوراخ ہوتے ہیں، وہ انڈونیشیاء میں مقبول نہیں ہے جو دراصل سعودی عرب کی دین ہے اور کبھی کبھی سخت گیر اسلام کی عکاسی کرتا ہے۔ اسی طرح ایک دیگر احمد دہلان یونیورسٹی میں بھی اس نوعیت کی ہدایت جاری کی گئی ہے تاہم نقاب کا استعمال کرنے والی طالبات پر کوئی جرمانہ عائد نہیں کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT