Tuesday , December 18 2018

انڈونیشیاء کے جزیرہ بالی میں آتش فشانی سے خوفزدہ ہزاروں افراد فرار

کرنگاسین (انڈونیشیا) ۔ 22 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ہزاروں افراد جو انڈونیشیا کے سیاحتی مرکز جزیرہ بالی میں رہتے تھے، فرار ہوگئے کیونکہ گذشتہ 50 سال میں پہلی مرتبہ آتش فشاں پہاڑ ماونٹ آگنگ سے دھویں کا فوارہ جس کی بلندی 700 میٹر (2300 فیٹ) تھی، بلند ہونے لگا اور گڑگڑاہٹ کی آوازیں کل دوپہر دیر گئے سے شروع ہوگئیں جس کی وجہ سے پہاڑ کے قریب کی بستیوں سے عوام کا خروج عمل میں آیا۔ گذشتہ مرتبہ 1963ء میں اس پہاڑ کے پھٹ پڑنے سے تقریباً 1600 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ ستمبر میں یہ آتش فشاں پہاڑ دوبارہ جاگ گیا جس کی وجہ سے ایک لاکھ 40 ہزار افراد اس علاقہ سے فرار ہوگئے۔ آتش فشاں پہاڑ کی سرگرمی ختم ہونے کے بعد کئی افراد اپنے گھروں کو واپس آگئے لیکن تقریباً 30 ہزار افراد دوبارہ فرار ہونے پر منظور ہوگئے کیونکہ دھویں کے فوارہ کا اخراج ہورہا تھا اور پہاڑ سے گڑگڑاہٹ کی آوازیں آنا شروع ہوگئی تھیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT