Sunday , September 23 2018
Home / دنیا / انڈونیشیاء کے جزیرہ بالی میں آتش فشاں پھٹ پڑا

انڈونیشیاء کے جزیرہ بالی میں آتش فشاں پھٹ پڑا

ہزاروں افراد فرار پر مجبور ‘ پروازیں متاثر ‘ عوام میں ماسک تقسیم ‘ 25ہزار افراد گذشتہ ستمبر سے بے گھر

کرنگاسیم( انڈونیشیاء) ۔26نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) انڈونیشیاء کے جزیرہ بالی میں ایک آتش پہاڑدوبارہ زندہ ہوگیا ۔آتش فشاں پہاڑ پھٹ پڑنے سے راکھ اور دھواں خارج ہورہا ہے جس کے نتیجہ میں ہزاروں افرادجو پہاڑ کے دامن میں مقیم تھے فرار ہونے پر مجبور ہوگئے ۔آسٹریلین ایرلائنز جٹ اسٹار نے قبل ازیں اپنی 9پروازیں کل بالی سے روانہ ہونے والی اور وہاں پہنچنے والی منسوخ کردی تھیں ۔ اس نے کہا کہ بالی کی بیشتر پروازیں حسب معمول کام کررہی ہیں ۔ آج اس کے سینئر پائیلٹس نے تخمینہ کر کے اطلاع دی تھی کہ پروازوں کیلئے کوئی خطرہ نہیں ہے تاہم جٹ اسٹار نے انتباہ دیا کہ رات کے بادل نقل و حرکت کے بارے میں کوئی پیش قیاسی نہیں کی جاسکتی‘ تمام پروازیں منسوخ کردی گئیں ۔ ماؤنٹ آگنگ کل پھٹ پڑا اور اس سے آتش فشاں پہاڑ کے دہانے سے 4900فٹ کی بلندی تک راکھ پھیلنے لگی ۔ آج علی الصبح دو بار راکھ کا اخراج ہوا ۔ اس سے مخروطی پہاڑ چمکنے لگا ‘ اس کی چمک نارنگی رنگ کی تھی اور فضاء میں 9840فٹ کی بلندی تک راکھ پھیل گئی ۔ راکھ کے بادل بالی کی ایئرپورٹ کی جانب پیشرفت کررہے ہیں جہاں تقریباً اندرون ملک اور بیرون ملک پروازیں آج بھی جاری ہیں ۔ آفات سماوی عہدیداروں نے کہا کہ راکھ آدھا سنٹی میٹر ( ایک انچ سے بھی کم ) دبیض ہے ۔ آتش فشاں پہاڑ سے خارج ہونے والی راکھ آس پاس موجود دیہاتوں میں زمین پر جم گئی ہے ۔ فوجی اور پولیس کے ارکان عملہ ماسک تقسیم کررہے ہیں ۔ عہدیداروں کے بموجب کوئی بھی خصوصی علاقہ میں آتش فشاں کے اطراف و اکناف اگر موجود ہو تو اسے اس علاقہ کا تخلیہ کردینے چاہیئے ۔ آتش فشاں پہاڑ آگنگ منگل کے دن بھی پھٹ پڑا تھا لیکن عہدیداروں نے چوکسی کی حالت کا حکم نہیں دیا تھا اور اس کو دوسری بلند ترین سطح کے زمرہ میں شامل نہیں کیا تھا ۔ جس کے نتیجہ میں اطراف و اکناف کے علاقہ میں اضافہ ہوسکتا ہے اور کثیر تعداد میں لوگوں کا تخلیہ کروانے ضروری ہوجاتا ہے ۔ تقریباً 25ہزار افراد ستمبر سے اپنے گھر واپس نہیں جاسکے کیونکہ آتش فشاں پہاڑ آگنگ میں گذشتہ 50سال میں پہلی بار سرگرمی نظر آرہی تھی ۔ گذشتہ مرتبہ 1963ء میں بڑے پیمانے کی آتش فشانی سے 1100افراد ہلاک ہوئے تھے ۔انڈونیشیاء بحرالکاہل کے آتشی حلقہ میں واقع ہے اور اس میں 120 آتش فشاں پہاڑ ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT