Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / انڈونیشیا میں پٹاخوں کی فیکٹری میں دھماکے اور آگ ‘47 ہلاک

انڈونیشیا میں پٹاخوں کی فیکٹری میں دھماکے اور آگ ‘47 ہلاک

درجنوں افراد زخمی ۔ صرف دو ماہ قبل قائم ہوئی فیکٹری ملبہ کے ڈھیر میں تبدیل
جکارتہ 26 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) انڈونیشیا کے دارالحکومت جکارتہ کے مغربی مضافات میں پٹاخوں کی ایک فیکٹری میں دو دھماکے ہوئے اور اس کے بعد مہیب آگ لگ گئی جس کے نتیجہ میں 47 افراد ہلاک ہوگئے ہیں اور درجنوں دوسرے زخمی ہوئے ہیں۔ عہدیداروں نے یہ بات بتائی ۔ ٹی وی نیوز چینلوں کے براڈ کاسٹ میں جکارتہ کے ٹنگیرانگ ضلع میں واقع اس فیکٹری کے ویر ہاوز سے کالا دھواں اٹھتا ہوا دکھایا گیا ہے ۔ یہ علاقہ صنعتی اور مینوفیکچرنگ مرکز کی حیثیت سے جانا جاتا ہے جو جزیرہ جاوا میں واقع ہے ۔ عینی شاہدین نے مقامی میڈیا کو باتیا کہ دو دھماکے ہوئے تھے جن میں پہلا صبح 10 بجے کے وقت ہوا جبکہ دوسرا دھماکہ اس سے تین گھنٹوں کے بعد ہوا ۔ یہ دھماکے اتنے زوردار تھے کہ کئی میل دور تک ان کی آواز سنی گئی ۔ ضلع پولیس سربراہ ہیری کرنیاوان نے کہا کہ ان کے عملہ نے ان دھماکوں اور وہاں لگنے والی آگ میں ہلاک ہونے والی کی نعشیں فیکٹرری کے ویر ہاوز سے برآمد کی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کئی درجنوں افراد اس میں زخمی بھی ہوئے ہیں اور ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ بھی ہوسکتا ہے ۔

مقامی میڈیا میں جو تصاویر سامنے آئی ہیں ان میں دکھایا گیا ہے کہ اس ویر ہاوز میں صرف راکھ کا ڈھیر اور ملبہ باقی رہ گیا ہے اور اس کا چھت بھی آگ میں جل کر خاکستر ہوگیا ہے ۔ یہاں بھاری تعداد آتش فرو عملہ نے پہونچ کر امدادی اور بچاؤ سرگرمیوں میں حصہ لیا تھا اور آگ پر قابو پانے جدوجہد کی ۔ مقامی میڈیا میں کہا گیا ہے کہ یہ فیکٹری صرف دو ماہ قبل قائم کی گئی تھی اور آج یہ حادثہ کا شکار ہوگئی ۔ انڈونیشیا ٹی وی نے بتایا کہ حالانکہ یہ فیکٹری اجازت یافتہ تھی لیکن یہ رہائشی علاقہ کے قریب تھی جو قواعد کے خلاف ہے ۔ پولیس عہدیداروں کا کہنا ہے کہ زائد از 40 زخمیوں کو علاج کیلئے دواخانہ میں شریک کیا گیا ہے ۔ جکارتہ کے ایک پولیس عہدیدار نیکو افندا نے کہا کہ نعشیں فیکٹری عمارت کے عقبی حصے میں ایک دوسرے پر پڑی پائی گئیں۔ اس فیکٹری میں زائد از 100 افراد ملازم تھے ۔

TOPPOPULARRECENT