Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / انکم ٹیکس کی استثنیٰ حد میں 4 لاکھ تک اضافہ کی ضرورت مرکزی وزیر فینانس کو اسوچیم کا مشورہ

انکم ٹیکس کی استثنیٰ حد میں 4 لاکھ تک اضافہ کی ضرورت مرکزی وزیر فینانس کو اسوچیم کا مشورہ

نئی دہلی ۔ 15 ۔ فروری : ( سیاست ڈاٹ کام ) : اسوچیم نے آج حکومت کو یہ تجویز پیش کی ہے کہ تمام انفرادی ٹیکس دہندگان کے لیے بجٹ میں انکم ٹیکس کی استثنیٰ حد میں 2.5 لاکھ روپئے سے 4 لاکھ روپئے کردیا جائے ۔ صنعتکاروں کی تنظیم نے عام آدمی سروے کی بنیاد پر یہ مطالبہ کیا کہ سیونگس ( بچت ) پر اضافی ترغیبات تعلیم اور صحت پر مصارف کے لیے ٹیکس میں چھوٹ دی جائے ۔ اسوچیم نے بتایا کہ سروے میں 87 فیصد لوگوں نے بنیادی ٹیکس میں استثنیٰ کی حد میں موجودہ 2.5 لاکھ سے 4 لاکھ روپئے کردینے کے حق میں رائے دی ہے ۔ جس کے پیش نظر وزیر فینانس کو سال 2016-17 کے بجٹ میں یہ اعلان کیا جانا چاہئے جب کہ صنعتی ادارہ کا بھی یہ نقطہ نظر ہے کہ مصارف زندگی بالخصوص صحت ، تعلیم اور ٹرانسپورٹ کے اخراجات میں اضافہ کے پیش نظر انکم ٹیکس کی حد کو بڑھادینے کی ضرورت ہے ۔ اسوچیم نے عام آدمی سروے ملک کے بڑے شہروں دہلی ، ممبئی ، کولکتہ ، چینائی ، احمد آباد ، حیدرآباد ، پونہ ، چندی گڑھ ، دہرہ دون میں کردیا ہے جس میں مختلف شعبوں میں برسر خدمت 500 ملازمین کی رائے حاصل کی گئی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT