Tuesday , November 20 2018
Home / کھیل کی خبریں / ’’انگلینڈ میں ہم نے میچ جیتنے کے کئی اہم مواقع گنوا دئیے‘‘ : شاستری

’’انگلینڈ میں ہم نے میچ جیتنے کے کئی اہم مواقع گنوا دئیے‘‘ : شاستری

ممبئی، 15 ستمبر(سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ روی شاستری نے انگلیند کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں 1۔4 سے ملی شکست کے باوجود ٹیم کا دفاع کرتے ہوئے اس دورے کے مثبت پہلوؤں پر دھیان دینے کی بات کہی ہے ۔شاستری نے کہا کہ انگلینڈدورے کے دوران ہندوستانی ٹیم کے کھیل میں کافی بہتری آئی ہے ۔شاستری نے کہا کہ سیریز کے دوران ٹیم آسانی سے شکست قبول نہیں کیا اور میزبان کو اس کے ہوم گراونڈ پر سخت چیلنج پیش کیا لیکن وہ اچھے مواقع کو جیت میں تبدیل کرنے میں ناکام رہی ہے ۔ایک ٹیلی ویژن چینل کو دئیے گئے اپنے انٹرویو میں شاستری نے کہ ” یہ بہت ہی مشکل دورہ تھا۔ اس دورے سے ہمیں کئی سبق سیکھنے ہوں گے ، لارڈس ٹیسٹ کو چھوڑ کر ہمارے پاس میچ جیتنے کے کئی مواقع تھے ،لارڈس ٹیسٹ ہم ہارے اور ناٹنگھم ٹیسٹ جیتے ۔سیریز کے دیگر تین میچوں میں ہمارے پاس جیتنے کے زیادہ مواقع تھے “۔شاستری نے کہا کہ ٹیم کو اس دورے سے بہت ساری مثبت چیزیں سیکھنی ہونگی ،لیکن ہمیں اس پر دھیان دینا ہوگا کہ ہم جیتے کے اتنے قریب آنے کے باوجود کیوں ہار گئے ، ہم نے اس پر غوروخوض کیا ہے ۔ہندوستانی ٹیم کے کوچ نے گیند بازوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا گیندبازی اٹیک کافی اچھا رہا،حالانکہ ہمارے بلے باز ناکام رہے لیکن انگلینڈ کے بلے بازوں نے بھی کوئی خاص مظاہرہ نہیں کیا۔شاستری نے کہ ” گیند بازی کے میدان میں ہندوستان بہتر ثابت ہوا ،جہاں تک بلے بازی کا سوال ہے وہ دونوں ٹیموں کے لئے کافی مشکل تھا، سوئنگ کو کھیلنا کافی مشکل ہوتا ہے چاہے وہ کوئی بھی بلے باز ہو”۔ کوچ نے کہا کہ غیر ملکی بچوں پر بہتر مظاہرہ کرنے کے لئے ہمیں زیادہ پریکٹس میچ کھیلنے چاہیں، قابل ذکر ہے کہ انگلینڈ کے خلاف سیریز سے پہلے ہندوستان نے صرف ایک پریکٹس میچ کھیلا تھا۔ شاستری نے کہا ان کی ٹیم کے پاس زیادہ پریکٹس میچ کھیلنے کا وقت نہیں تھا ۔ ہندوستانی ٹیم کے کوچ نے مزید کہا کہ اس سال کے آخر میں جب ٹیم آسٹریلیا کا دورہ کرے گی تو کوشش ہوگی کہ زیادہ سے زیادہ پریکٹس میچ کھیلے ۔شاستری نے بتایا کہ ٹیم انتظامیہ نے آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ سیریز سے پہلے کچھ پریکٹس میچ کھیلے جانے کی درخواست کی ہے ۔ انگلینڈ کے نوجوان آل راونڈر سیم کرن کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ کرن نے سیریز کے دوران ناصرف لور آرڈر میں بہتر بلے بازی کر کے اپنی ٹیم کے اسکور کو اوپر پہنچایا بلکہ ہندوستان کے کئی اہم وکٹ لیکر بھی اپنی ٹیم کو مضبوط پوزیشن میں لا کھڑا کیا۔قابل ذکر ہے کہ بہتر کارکردگی کے لئے سیم کرن کو انگلینڈ کی جانب سے مین آف دی سیریز کے لئے نامزد کیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT