Sunday , November 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / انگلینڈ کے خلاف آج راجکوٹ میں پہلے ٹسٹ کا آغاز

انگلینڈ کے خلاف آج راجکوٹ میں پہلے ٹسٹ کا آغاز

l کوہلی انگلینڈ کے خلاف ٹیم اور انفرادی ریکارڈس کو بہتر کرنے کے خواہاں
l معین علی ، ظفر انصاری ، عادل رشید اور کُک کے مظاہرے اہمیت کے حامل
l  مقابلے کا آغاز صبح 9:30 بجے ہوگا

راجکوٹ ۔8 نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) ویسٹ انڈیز اور نیوزی لینڈ کے خلاف یکے بعد دیگرے دو سیریز میں فتوحات کے بعد عالمی نمبر ایک ہندوستانی ٹیم کے حوصلے کافی بلند ہیں اور وہ کل یہاں انگلینڈ کے خلاف شروع ہونے والی پانچ مقابلوں کی ٹسٹ سیریز کے پہلے مقابلے میں پسندیدہ موقف کے ساتھ میدان میں اُترے گی ۔ ہندوستانی سرزمین پر انگلینڈ کے خلاف گزشتہ تین دہوں کے دوران پہلی مرتبہ پانچ مقابلوں کی ٹسٹ سیریز کھیلی جارہی ہے اور راجکوٹ میں یہ پہلا ٹسٹ ہوگا ۔ ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان ایک دلچسپ سیریز کا امکان ہے ، جیسا کہ چار برس قبل جب انگلش ٹیم نے ہندوستان کا دورہ کیا تھا تو اس نے یہاں ریکارڈ کامیابی حاصل کی تھی ۔ 2012 ء کی سیریز میں انگلینڈ نے پہلا مقابلہ ہارنے کے باوجود سیریز میں 2-1 کی کامیابی حاصل کی تھی ۔ اُس کامیابی میں انگلش ٹیم کے اسپنرس کی جوڑی گرائم سوان اور مانٹی پنیسر کا کلیدی رول تھا ، لیکن موجودہ ٹیم کا یہ دونوں بھی حصہ نہیں ہے ۔ علاوہ ازیں بیٹنگ شعبہ میں کپتان السٹر کک کے ہمراہ متنازعہ بیٹسمین کیون پیٹرسن نے اہم رول ادا کیا تھا

لیکن اب پیٹرسن بھی انگلش ٹیم کا حصہ نہیں ہے۔ دوسری جانب ہندوستانی ٹیم کی قیادت جارحانہ کپتان ویراٹ کوہلی کررہے ہیں جو چار سال قبل اپنی سرزمین پر چار مقابلوں کی سیریز میں انگلینڈ کے خلاف 3-1 کی شکست دیکھ چکے ہیں اور اُن کی اب خواہش ہوگی کہ گزشتہ تین سیریزوں میں انگلینڈ کے خلاف ہونے والی ناکامیوں کا حساب برابر کیا جائے ۔ انگلش ٹیم کیلئے ایک اور دھکہ اس کے سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے فاسٹ بولر جیمس اینڈرسن کی عدم دستیابی ہے اور وہ زخمی ہونے کی وجہ سے کم از کم پہلے مقابلے کیلئے تو دستیاب نہیں ہے ۔ انگلینڈ کے لئے آل راؤنڈر اسٹیورٹ براڈ کیلئے یہ مقابلہ اہمیت کا حامل ہے ،

کیونکہ وہ اپنے کیرئیر کا 100 واں ٹسٹ کھیل رہے ہیں۔ گزشتہ روز ہندوستانی نائب کپتان اجنکیا رہانے نے تن آسانی سے گریز کرنے کے ضمن میں اظہارخیال کرتے ہوئے کہا کہ انگلینڈ کی ٹیم میں چند نئے چہرے موجود ہیں اور اس ٹیم کو آسان حریف تصور کرنا غلطی ہوگی ۔ 2012 ء میں کولکتہ ٹسٹ میں انگلینڈ کے خلاف ہونے والی شکست کے بعد ہندوستانی ٹیم نے 14 ٹسٹ مقابلوں میں پنا ریکارڈ انتہائی شاندار کرلیا ہے ۔ کوہلی کی قیادت میں ہندوستانی ٹیم یکے بعد دیگرے سیریز میں کامیابی اپنے نام درج کررہی ہے ۔ اس دوران ٹیم کو چند نوجوان کھلاڑیوں کی خدمات بھی دستیاب رہی لیکن انگلینڈ کے خلاف کے ایل راہول ، شکھر دھون اور روہت شرما زخمی ہوکر ٹیم کو دستیاب نہیں ہے

لیکن ان کے غیاب میں تجربہ کار گوتم گمبھیر ، مرلی وجئے ، رہانے اور چٹیشور پجارا کے علاوہ کپتان کوہلی بھی ٹیم کے اہم ستون ہیں۔ کوہلی جن کا ریکارڈ انگلینڈ کے خلاف بہتر نہیں ہے وہ یقینا اس سیریز میں ٹیم کی کامیابی کے ساتھ اپنے ریکارڈس کو بھی بہتر کرنے کے لئے کوشاں ہوں گے ۔ اُمید کی جارہی ہے کہ آل راؤنڈر ہاردیک پانڈیا کو اس مقابلے میں ٹسٹ کیرئیر کے آغاز کا موقع فراہم کیا جاسکتا ہے ۔ انگلینڈ کے لئے سب سے بڑا خطرہ روی چندرن اشون اور ان کے ساتھی اسپنر رویندر جڈیجہ سے ہوگا ، جن کے ہمراہ امیت مشرا بھی موجود ہیں۔ فاسٹ بولنگ شعبہ میں محمد سمیع ، اُمیش یادو اور ایشانت شرما بھی انگلش بیٹسمینوں کو پریشان کرسکتے ہیں۔ انگلینڈ کے لئے کپتان کُک کے مظاہروں کے علاوہ معین علی کا آل راؤنڈ مظاہرہ بھی اہمیت کا حامل ہوگا ، جبکہ بائیں ہاتھ کے اسپنرس ظفر انصاری اور عادل رشید بھی ہندوستانی وکٹوں پر مہمان ٹیم کیلئے اہم بولر ثابت ہوسکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT