Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / انیس الغربا میں مالی بے قاعدگیاں ‘ ملازمین کے خلاف کارروائی کی تیاریاں

انیس الغربا میں مالی بے قاعدگیاں ‘ ملازمین کے خلاف کارروائی کی تیاریاں

سی ای او وقف بورڈ کا ادارہ کا دو مرتبہ اچانک دورہ ‘ خاطی ملازمین کی نشاندہی کرلی گئی ‘ عملہ تشفی بخش جواب دینے میں ناکام
حیدرآباد۔/17نومبر، ( سیاست نیوز)  ادارہ انیس الغرباء نامپلی میں بڑے پیمانے پر مالیاتی بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے اور خاطی ملازمین کے خلاف کارروائی کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ محمد اسد اللہ نے انیس الغرباء میں بے قاعدگیوں کی شکایت پر دو مرتبہ اس ادارہ کا اچانک دورہ کیا اور کئی خامیوں اور بے قاعدگیوں کی نشاندہی کی۔ اس سلسلہ میں خاطی ملازمین کی نشاندہی کرلی گئی ہے اور انہیں معطل یا برطرف کرنے کی کارروائی شروع کردی گئی۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر نے بتایا کہ انیس الغرباء کے ملازمین طلباء و طالبات کی غلط تعداد بتاکر وقف بورڈ کو گمراہ کررہے ہیں اور زائد خرچ بتاتے ہوئے بے قاعدگیوں میں ملوث ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ انیس الغرباء میں طلباء و طالبات کی مجموعی تعداد 100بھی نہیں ہے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر کے اچانک دورہ کے موقع پر پتہ چلا کہ ہاسٹل میں 36 طالبات کی موجودگی کا رجسٹر میں اندراج کیا گیا لیکن صرف 25 لڑکیاں ہی ہاسٹل میں موجود تھیں۔ اس کے علاوہ طلباء کی تعداد بھی رجسٹر میں درج شدہ تعداد سے کم پائی گئی۔ اس سلسلہ میں جب منیجر، کیرٹیکر اور جونیر اسسٹنٹ سے معلومات حاصل کی گئیں تو وہ تشفی بخش جواب دینے میں ناکام رہے۔ ان تینوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انیس الغرباء کے 9بینکوں میں 25 فکسڈ ڈپازٹ کھاتے موجود ہیں جن میں ایک کروڑ 57لاکھ روپئے کی رقم موجود ہے جبکہ سیونگ اکاؤنٹ کے تحت 16لاکھ روپئے موجود ہیں۔ وقف بورڈ نے تمام فکسڈ ڈپازٹ اکاؤنٹس کی جانچ اور انہیں ایک ہی بینک میں منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ انیس الغرباء کی محکمہ انڈومنٹ سے اقلیتی بہبود کو منتقلی کے موقع پر ایک کروڑ 37لاکھ روپئے پر مشتمل 52 فکسڈ ڈپازٹ اکاؤنٹس کو منتقل کیا گیا تھا لیکن اس کے بارے میں کوئی تفصیلات درج نہیں ہیں۔ اس معاملہ کی جانچ کا فیصلہ کیا گیا۔ تحقیقات میں پتہ چلا کہ ایک غیر مقیم ہندوستانی خاتون نے انیس الغرباء کو بھاری رقم بطور عطیہ فراہم کی تھی لیکن اس رقم کا رجسٹر میں نہ ہی اندراج کیا گیا اور نہ ہی اس کی رسید موجود ہے۔ اس بھاری رقم کے بارے میں وقف بورڈ کے ذمہ داروں کو کوئی اطلاع نہیں دی گئی۔ انیس الغرباء کے جونیر اسسٹنٹ جو کیاشیئر کی حیثیت سے بھی کام کررہے ہیں انہوں نے مالیاتی عطیات کے بارے میں وقف بورڈ کو تاریکی میں رکھا۔ عہدیداروں کی جانب سے اچانک معائنہ کے دوران 74912 روپئے کی کمی کا پتہ چلا۔ انیس الغرباء کو عطیات کے طور پر 5لاکھ 6404 روپئے وصول ہوئے لیکن وہاں صرف 3لاکھ 3760 روپئے پائے گئے۔ ادارہ ملازمین نے ایک لاکھ 27ہزار 742 روپئے کے خرچ کی بات کہی لیکن کیاش بک میں اس کی کوئی تفصیلات درج نہیں ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ انیس الغربا کو ملنے والے بھاری عطیات کے علاوہ غذائی اجناس کے استعمال میں بے قاعدگیاں ہیں۔ حکومت خاطی ملازمین کے خلاف کارروائی اور ادارہ میں بڑی تعداد میں یتیم و یسیر طلبہ کے داخلوں کو یقینی بنانے کی حکمت عملی تیار کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT