Wednesday , January 24 2018
Home / دنیا / اوباما ایران پر نئی پابندیوں کے مخالف ، ویٹو کی دھمکی

اوباما ایران پر نئی پابندیوں کے مخالف ، ویٹو کی دھمکی

مغرب اور امریکہ سے ایران کو کئی شبہات، کیمرون کیساتھ امریکی صدر کی پریس کانفرنس

مغرب اور امریکہ سے ایران کو کئی شبہات، کیمرون کیساتھ امریکی صدر کی پریس کانفرنس
واشنگٹن۔ 17 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے صدر براک اوباما نے ایران کے خلاف تازہ پابندیوں کی سخت مخالفت کی اور اس ضمن میں کانگریس کی جانب سے کسی قانون سازی کا ویٹو کرنے کی دھمکی دی۔ انہوں نے کہا کہ نئی پابندیاں عائد کرنے کی صورت میں تہران کے ساتھ جاری نیوکلئیر مذاکرات تعطل کا شکار ہوسکتے ہیں۔ صدر اوباما نے بشمول ڈیموکریٹس، کانگریس کے تمام ارکان پر زور دیا کہ وہ ایک ایسے وقت جب مذاکرات کا عمل جاری ہے، نئی پابندیوں پر غور نہ کریں۔ انہوں نے خبردار کیاکہ ’’میں اس بل کا ویٹو کروں گا، جب وہ بغرض منظوری میرے ڈیسک پر پہونچے گی‘‘۔ صدر اوباما نے وائیٹ ہاؤز میں برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’سفارتی سمجھوتہ کے امکانات غالباً 50-50 ہیں۔ ایران میں ایک ایسی حکومت ہے جو مغرب کے بارے میں بہت زیادہ شکوک و شبہات رکھتی ہے۔ وہ (ایران) ہم پر بہت زیادہ شک کرتا ہے۔ ماضی میں انہوں نے اپنے (نیوکلیئر) پروگرام پر خفیہ طور پر پیشرفت کی تھی۔ تمام مسائل پر ان کے ساتھ ہمارے شدید اختلافات ہیں‘‘۔ ایک سوال پر اوباما نے جواب دیا کہ جس عبوری سمجھوتہ کے تحت ایران کو مذاکرات کے میز پر لایا گیا ہے، اس کے مطابق فی الحال ان کے خلاف نئی پابندیاں عائد کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’’اب آپ محض بحث مباحث کی سماعت کریں گے‘‘۔اوباما نے کہا ’’ایران کے ساتھ جاری مذاکرات اور سفارتی کوششوں کو منقطع کرنے اور زک پہنچانے کے لیے اس وقت تک کوئی دلیل اچھی نہیں ہو سکتی جب تک کہ یہ مذاکراتی عمل مکمل نہ ہو جائے۔” اوباما کے بقول کانگریس کو تحمل دکھانے کی ضرورت ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ میرا پیغام کانگریس کے لیے یہی ہے کہ وہ اپنے اقدام کو ذرا روکے رکھے۔

TOPPOPULARRECENT