Friday , January 19 2018
Home / دنیا / اوباما کی سری فورٹ تقریر بی جے پی پر وداعی وار نہیں تھا

اوباما کی سری فورٹ تقریر بی جے پی پر وداعی وار نہیں تھا

واشنگٹن ۔ 4 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی کہ صدر امریکہ بارک اوباما کی سری فورٹ تقریر بی جے پی پر ’’وداعی وار‘‘ تھا۔ وائیٹ ہاؤس نے کہا کہ بارک اوباما کی تقریر ہندوستان میں مذہبی انتہاء پسندی کے خلاف ایک طاقتور پیغام تھا جس کا مقصد برسراقتدار پارٹی بی جے پی پر ’’وداعی وار‘‘ کرنا نہیں تھا۔ صدر امر

واشنگٹن ۔ 4 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی کہ صدر امریکہ بارک اوباما کی سری فورٹ تقریر بی جے پی پر ’’وداعی وار‘‘ تھا۔ وائیٹ ہاؤس نے کہا کہ بارک اوباما کی تقریر ہندوستان میں مذہبی انتہاء پسندی کے خلاف ایک طاقتور پیغام تھا جس کا مقصد برسراقتدار پارٹی بی جے پی پر ’’وداعی وار‘‘ کرنا نہیں تھا۔ صدر امریکہ نے ٹاؤن ہال کے اجلاس میں اپنی 33 منٹ طویل تقریر میں جو امریکی انداز میں کی گئی تھی، ہندوستان اور امریکہ دونوں ممالک کی ’’بنیادی جمہوری اقدار اور اصولوں‘‘ کے بارے میں تقریر کی تھی۔ انہوں نے مذہبی رواداری کی بھرپور تائید کرتے ہوئے ہندوستان کو خبردار کیا تھا کہ وہ اسی وقت تک کامیاب رہے گا جب تک کہ ’’مذہبی خطوط پر اس ملک میں انتشار نہ پیدا ہوجائے‘‘۔ سینئر ڈائرکٹر قومی سلامتی کونسل برائے امور جنوبی ایشیاء فیل رینر نے کہا کہ اگر آپ پوری تقریر کا جائزہ لیں تو یہ تقریر ہندوستان اور امریکہ دونوں کے جمہوری اقدار اور اصولوں کے بارے میں تھی جو ہمارے تمام عوام کیلئے مساوی مواقع فراہم کرتے ہیں۔ وہ واشنگٹن کے غیرملکی صحافتی مرکز میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے سوالات کے جواب دیتے ہوئے پرزور انداز میں اس الزام کی تردید کی کہ مذہبی رواداری کے بارے میں اوباما کے تبصروں کا مقصد بھارتیہ جنتا پارٹی پر ضرب لگانا تھا۔ اوباما کے تبصرہ ان تنازعات کے پس منظر میں تھے جو تبدیلی مذہب اور گھر واپسی پروگرام کی وجہ سے جو ہندوتوا کی علمبردار تنظیمیںچلا رہی ہیں، پیدا ہوئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT