Sunday , September 23 2018
Home / شہر کی خبریں / اوقافی جائیدادوں پر غیرمجاز قبضوں کی برخاستگی کی تیاری

اوقافی جائیدادوں پر غیرمجاز قبضوں کی برخاستگی کی تیاری

حکومت کی خصوصی توجہ ، اراضی کی تفصیلی رپورٹ پیش کرنے محکمہ مال کو ہدایت

حکومت کی خصوصی توجہ ، اراضی کی تفصیلی رپورٹ پیش کرنے محکمہ مال کو ہدایت
حیدرآباد۔/3جولائی، ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے اہم اوقافی جائیدادوں اور اراضیات پر قبضوں کے بارے میں ریونیو حکام سے تفصیلات طلب کی ہیں۔ اس طرح ٹی آر ایس حکومت نے غیر مجاز قبضوں کی برخواستگی کے سلسلہ میں کارروائی کی تیاری شروع کردی ہے۔ باوثوق ذرائع کے مطابق شہر اور اس کے مضافاتی علاقوں میں سرکاری اور اوقافی اراضیات کے سلسلہ میں حکومت نے خصوصی توجہ مرکوز کی ہے۔ ان علاقوں میں کئی ہزار ایکر اراضی کو سابق حکومتوں نے مختلف ملٹی نیشنل کمپنیوں اور خانگی اداروں کے حوالے کردیا تھا۔ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کی ہدایت پر شہر اور اس کے اطراف کی اراضیات کے سلسلہ میں تفصیلی رپورٹ پیش کرنے محکمہ مال کو ہدایت دی گئی ہے۔ اس رپورٹ میں سرکاری اور اوقافی اراضیات کی نشاندہی اور قابض اداروں کی تفصیلات کے علاوہ موجودہ کھلی اراضی کے بارے میں بھی تفصیلات طلب کی گئی ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ حکومت نے عدالت میں زیر دوران مقدمات کے سلسلہ میں بھی علحدہ رپورٹ طلب کی ہے تاکہ ناجائز قابضین کی برخواستگی کے سلسلہ میں ضروری کارروائی کی جاسکے۔ حکومت نے منی کونڈہ میں درگاہ حضرت حسین شاہ ولی ؒ کے تحت واقع اوقافی اراضی پر لینکو ہلز کی تعمیر کے معاملہ پر توجہ مرکوز کی ہے۔ اس اراضی پر تعمیرات کے علاوہ سپریم کورٹ میں زیر دوران مقدمہ کی بھی تفصیلات حاصل کی جارہی ہیں۔ سابقہ کانگریس حکومت نے درگاہ حضرت حسین شاہ ولی ؒ کے تحت موجود اوقافی اراضی کو سرکاری ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے ہراج کردیا تھا۔ سپریم کورٹ میں وقف بورڈ اس اراضی پر اپنی دعویداری پیش کرتے ہوئے مقدمہ لڑرہا ہے تو دوسری طرف سابق حکومت کی جانب سے وقف بورڈ کے موقف سے اختلاف کیا گیا۔ چندر شیکھر راؤ اس مقدمہ میں حکومت کے موقف سے دستبرداری پر غور کررہے ہیں تاکہ وقف بورڈ کو اراضی کے حصول میں کامیابی حاصل ہو۔ بتایا جاتا ہے کہ تلنگانہ کے ہر ضلع میں موجود اوقافی اراضیات اور ان پر ناجائز قبضوں کے سلسلہ میں بھی حکام سے رپورٹ طلب کی جارہی ہے۔ چیف منسٹر نے اپنے آبائی ضلع میدک کی اوقافی جائیدادوں پر توجہ مرکوز کی ہے اور ضلع سے تعلق رکھنے والے وزیر ہریش راؤ نے گزشتہ دنوں ضلع کی اوقافی جائیدادوں کے مسئلہ پر کلکٹر کی نگرانی میں خصوصی اجلاس طلب کیا تھا۔ اسی دوران حکومت تلنگانہ ریاست میں وقف بورڈ کی کارکردگی بہتر بنانے اور اوقافی جائیدادوں کی ترقی کے ذریعہ مسلمانوں کی پسماندگی کے خاتمہ کے ضمن میں سابق اسپیشل آفیسر وقف بورڈ شیخ محمد اقبال ( آئی پی ایس ) کی رپورٹ کا سنجیدگی سے جائزہ لے رہی ہے۔ میعاد کی تکمیل سے قبل شیخ محمد اقبال نے تلنگانہ اور آندھرا حکومتوں کے چیف منسٹرس سے ملاقات کرتے ہوئے انہیں ایک تفصیلی رپورٹ پیش کی تھی جس میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور ان کی ترقی کے بارے میں تجاویز پیش کی گئیں۔ انہوں نے منشائے وقف کے مطابق اوقافی اداروں کی آمدنی کے خرچ کو یقینی بنانے کیلئے قواعد میں ترمیم کی سفارش کی۔

TOPPOPULARRECENT