Monday , April 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / اولاد کو پہلے حافظ قرآن بنائیں ، اس کے بعد عصری تعلیم دیں

اولاد کو پہلے حافظ قرآن بنائیں ، اس کے بعد عصری تعلیم دیں

مدرسہ دارالقرآن والسنہ سدی پیٹ میں جلسہ دستار بندی، مولانا خالد سیف اللہ رحمانی کا خطاب

سدی پیٹ۔/5 اپریل، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مدرسہ دارالقرآن والسنہ سدی پیٹ کا جلسہ دستار بندی کا شاندار انعقاد عمل میں آیا۔ جس میں مدرسہ کے بارہ حفاظ کرام کی دستار بندی کی گئی اور مدرسہ کی جدید عمارت کی بنیاد رکھی گئی۔ جلسہ کی صدارت عالمی شہرت یافتہ فقیہ و مصنف حضرت مولانا خالد سیف اللہ رحمانی ناظم المعہد العالی الاسلامی حیدرآباد، سکریٹری آل انڈیا مسلم پرسنل لابورڈ نے کی۔ انہوں نے اپنے صدارتی خطاب میں قرآن و حدیث کے حوالہ سے حفظ قرآن کی فضیلت، اہمیت اور خصوصیت پر تفصیلی روشنی ڈالی۔ اپنے فکر انگیز خطاب میں انہوں نے کہا کہ سوائے قرآن مجید کے دنیا میں کوئی آسمانی کتاب اپنی اصل شکل میں محفوظ نہیں ہے۔ جرمن میں یہودیوں کی ایک تنظیم نے آسمانی کتابوں پر ریسرچ کیا۔ انہوں نے توریت کا کوئی دو نسخہ بھی ایک طرح نہیں پایا۔ انجیل میں تحریف کا سلسلہ آج بھی جاری ہے جبکہ قرآن مجید کے ہزاروں نسخوں میں انہوں نے الفاظ کا کوئی فرق نہیں پایا۔ کیونکہ قرآن کی حفاظت کا ذمہ اللہ تعالیٰ خود لیا ہے اور اس کے الفاظ کی حفاظت حفاظ کے ذریعہ، معنیٰ کی حفاظت علماء کے ذریعہ اور تلفظ کی حفاظت قاری حضرات کے ذریعہ فرمادی گئی ہے۔ آج عدالت اور میڈیا تین طلاق کا انکار کررہی ہے جبکہ سورۃ بقرہ کی آیت سے تین طلاق ثابت ہے۔ مطلقہ عورت کیلئے متاع معروف کا قرآن میں حکم ہے جس کا مطلب ہے کہ عورت کو رخصت کرتے وقت کچھ سامان اور تحفے دے کر عزت سے رخصت کیا جائے۔ جبکہ عدالت متاع سےMaintanance مراد لے کر قرآن کے خلاف فیصلے کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حدیث شریف کے مطابق مکہ و مدینہ جہاں قرآن نازل ہوا وہاں دجال داخل نہیں ہوگا۔ قرآن کی بدولت اس امت پر اجتماعی عذاب نہیں آئیگا۔ جو قوم قرآن کی حفاظت کرے گی اللہ اس کی حفاظت کرے گا۔ انہوں نے سامعین سے خواہش کی کہ وہ اپنی اولاد کو پہلے حافظ قرآن بنائیں اس کے بعد عصری تعلیم بھی دلوائیں یا کم از کم ایک حافظ کی کفالت قبول کریں۔ تمام مسلمان اپنی اولاد کو قرآن شریف ناظرہ اور دینیات ضرور پڑھائیں اور بالغ افراد قرآن کو ترجمے اور تفسیر کے ساتھ پڑھیں۔ مولانا رحمانی کے خطاب سے پہلے مولانا مجاہد ہلال اعظمی صدر شبلی انٹرنیشنل اکیڈیمی حیدرآباد نے اپنے خطاب میں مسلمانوں کو فکر کی بلندی، اتحاد اور ایمان پر مضبوطی سے جمے رہنے کی تلقین کی۔ امیر ملت اسلامیہ تلنگانہ و آندھرا پردیش مولانا حسام الدین ثانی عامل نے اپنے مختصر اور جامع خطاب میں مسلمانوں کو قوت عمل پیدا کرنے، نمازوں کی پابندی کرنے خصوصاً فجر کی نماز باجماعت پڑھنے کی ترغیب دی۔ مدرسہ کے ناظم مفتی محمد اسمعیل قاسمی نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا۔ مولانا اختر نے نعت شریف پیش کی۔ مدرسہ کے طالب علم حافظ محمد عبدالقادر کی تلاوت کلام پاک سے جلسہ کا آغاز ہوا، اور مولانا جعفر پاشاہ کی دعا اور الحاج محمد رفعت اللہ کے شکریہ پر جلسہ کا اختتام عمل میں آیا۔

TOPPOPULARRECENT