Wednesday , November 21 2018
Home / اضلاع کی خبریں / اولاد کی اسلامی تعلیم و تربیت پر زور ، نماز کی تلقین

اولاد کی اسلامی تعلیم و تربیت پر زور ، نماز کی تلقین

کاغذنگر /17 مارچ ( راست ) صابر ایجوکیشنل سوسائٹی کاغذنگر کے زیر اہتمام مسلم فنکشن ہال SPM کاغذنگر میں منعقدہ اصلاح معاشرہ کانفرنس برائے خواتین سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر مفتیہ رضوانہ زرین مومناتی پرنسپل جامعتہ المومنات نے کہا کہ اولاد کی تربیت و تعلیم میں والدین کا اہم رول ہوتا ہے ۔ بچے انسانی معاشرہ کے پھول ہیں ۔ ان کے وجود سے گھر میں رو

کاغذنگر /17 مارچ ( راست ) صابر ایجوکیشنل سوسائٹی کاغذنگر کے زیر اہتمام مسلم فنکشن ہال SPM کاغذنگر میں منعقدہ اصلاح معاشرہ کانفرنس برائے خواتین سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر مفتیہ رضوانہ زرین مومناتی پرنسپل جامعتہ المومنات نے کہا کہ اولاد کی تربیت و تعلیم میں والدین کا اہم رول ہوتا ہے ۔ بچے انسانی معاشرہ کے پھول ہیں ۔ ان کے وجود سے گھر میں رونق پیدا ہوتی ہے جس گھر میں بچے پھرتے ہیں وہ گھر کھلتا ہوا پھول کے مانند ہوتا ہے اور جس گھر میں بچہ نہیں ہوتے وہ گھر ویران ہوتا ہے ۔ شریعت اسلام میں جس طرح والدین پر حقوق ہیں اسی طرح بچوں کے بھی والدین پر حقوق عائد ہ وتے ہیں ۔ اسلام میںبچہ کی پیدائش کے بعد تربیت کا جو پہلا اصول بنایا گیا ہے وہ یہ ہے کہ اس کے دائیں کان میں اذان بائیں کان میں اقامت کہی جائے اور اسکی حکمت یہ ہے کہ بچے کے کان میں جو بات سب سے پہلے پہونچے وہ اللہ کا نام ہو ، رسول اللہ ﷺ جس وقت حسنؓ کی ولادت ہوئی آپ کے کان میں نماز والی اذان دئے ۔

جلسہ کا آغاز حافظہ سمیرہ خاتون کی قرات اور رمیصاء افشین کی نعت شریف سے ہوا ۔ مفتیہ رقیہ فاطمہ نے کہا کہ حضور ﷺ کی بعثت سے قبل عورت کا کوئی مقام و مرتبہ نہیں تھا ۔ لیکن اسلام اور رسول عربی ﷺ نے عورت کے مقام و مرتبہ کو بلند کیا ۔ شادی سے قبل اس کے اخراجات کا ذمہ دار اس کے باپ کو ٹہرایا تو شادی کے بعد شوہر کو اس کے نان و نفقہ کا ذمہ دار بنایا اور میراث میں حقدار ٹہرایا ۔ عالمہ غوثیہ شاہد نے کہا کہ نماز ہر مومن مرد و عورت پر فرض ہے ۔ سفر ہوکہ حضر میں بیمار ہو کہ صحت مند ، غریب امیر ، ہر بالغ پر نماز فرض ہے وہ کسی سے ساقط نہیں ،کاہلی اور سستی کے سبب نماز کو ترک کرنے والا مستحق عذاب ہوگا ۔ عالمہ شہناز فاطمہ نے کہا کہ والدین سے حسن سلوک کرنا اولاد کی اولین ذمہ داری ہے کیونکہ والدین کی رضا میں اللہ کی رضا ہے اور ان کی ناراضگی میں اللہ کی ناراضگی ہے ۔ جو شخص اپنے والدین کو محبت کی نگاہ سے دیکھتا ہے اس کو حج مقبول کا ثواب لکھا جاتا ہے ۔

عالمہ نسرین سلطانہ نے کہا کہ انسان کو چاہئے کہ وہ اپنے گناہوں پر نادم ہو اور اللہ کی بارگاہ میں توبہ و استغفار کرے ۔ حضور ﷺ نے فرمایا کہ ہر بندہ خطاکار ہے اور بہترین شخص وہ ہے جو خطا کرنے کے بعد توبہ کرتا ہے توبہ کرنے سے عاجزی و انکساری پیدا ہوتی ہے ۔ عالمہ صوفیہ ناز نے کہا کہ ہر کام میں حضور ﷺ کی اطلاعت کرنا چاہئے ۔ اس لئے کہ حضور ﷺ کی اطاعت میں اللہ کی اطاعت ہے ۔ قاریہ عطیہ فاطمہ نے بسم اللہ کی برکتیں بتاتے ہوئے کہا کہ ہر کام کے شروع میں بسم اللہ پڑھنے سے کام میں برکت ہوتی ہے اور وہ مکمل ہوتا ہے ۔ عالمہ سمیرہ خاتون نے کہا کہ اللہ کے ذکر سے دل کو سکون ملتا ہے جو کوئی ذکر الہی سے غافل رہتا ہے وہ تمام آفتوں اور برائیوں میں مبتلا ہوتا ہے کلمہ طیبہ جنت کی کنجی ہے ۔ قاریہ رمیصاء افشین نے کہا کہ محبت رسول ہی اصل ایمان ہے اور شرط ایمان ہے حضور ﷺ نے فرمایا تم سے کوئی اس وقت تک کامل مومن نہیں ہوتا جب تک کہ میں اس کے نزدیک اس کے والدین اور تمام چیزوں سے زیادہ محبوب نہ ہوجاؤں ۔

شادنگر میں میونسپل امیدواروں کے لسٹ کی اجرائی
شادنگر /17 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) شادنگر میونسپلٹی کے 23 وارڈس کیلئے جملہ 259 پرچہ نامزدگیاں داخل کی گئی ۔ پرچہ نامزدگیوں کی تنقیح الیکشن آفیسرس و میونسپل عہدیداروں کی نگرانی میں کی گئی ۔ بعد تنقیح کے الیکشن عہدیداروں نے 259 پرچہ نامزدگیوں کے منجملہ 184 پرچہ نامزدگیوں کی ایک لسٹ جاری کردی ۔ میونسپل کمشنر شنداگر ویمنا ریڈی نے بتایا کہ بعض امیدواروں ایک سے زائد پرچہ نامزدگیاں داخل کی تھی ۔ فی الحال 184 امیدوار ہیں ایک سے زائد پرچہ نامزدگیاں داخل کرنے والے امیدواروں نے بعض واپس لے لئے ۔ بعض کو الیکشن حکام نے امیدواروں سے وضاحت طلب کرتے ہوئے برخواست کردیا اور تین پرچہ نامزدگیوں کو مختلف وجوہات کی بناء پر مسترد کردیا ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پرچہ نامزدگیاں واپس لینے کی آخری تاریخ 18 مارچ ہے ۔

TOPPOPULARRECENT