Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / اونٹ واڑی قبرستان سے جانوروں کو نکالنے میں وقف بورڈ کو کامیابی

اونٹ واڑی قبرستان سے جانوروں کو نکالنے میں وقف بورڈ کو کامیابی

برسوں سے جاری قبور کی بیحرمتی کا ازالہ ۔ صدر نشین وقف بورڈ الحاج محمد سلیم کا عہدیداروں کے ساتھ اچانک دورہ
حیدرآباد ۔ 26۔ ستمبر (سیاست نیوز) قبرستان کی بے حرمتی کرتے ہوئے بڑی تعداد میں گھوڑوں کو قبروں پر باندھنے کی شکایت پر فوری کارروائی کرتے ہوئے صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے آج پولیس کے عہدیداروں کے ساتھ چوڑی بازار میں واقع اونٹ واڑی قبرستان کا دورہ کرتے ہوئے جانوروں کو نکالنے میں کامیابی حاصل کی ۔ اس طرح طویل عرصہ سے اس قبرستان کی جاری بے حرمتی کا آج خاتمہ ہوا اور تقریباً 100 گھوڑوں کو اس قبرستان سے نکال دیا گیا جنہیں قبروں پر باندھ دیا گیا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ مقامی افراد جو شادی ، بیاہ اور دیگر مواقع پر گھوڑے سپلائی کرنے کا کاروبار کرتے ہیں، انہوں نے گھوڑوں کو باندھنے کیلئے قبرستان کے استعمال کا آغاز کیا اور یہ سلسلہ کئی برسوں سے جاری تھا۔ جب کبھی وقف بورڈ کے حکام مداخلت کرتے ، عارضی طور پر گھوڑوں کو ہٹادیا جاتا۔ قبرستان کی بے حرمتی کے سلسلہ میں مسلسل شکایات پر صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم آج چیف اگزیکیٹیو آفیسر منان فاروقی اور پولیس کے عہدیداروں کے ساتھ اچانک قبرستان کے دورہ پر پہنچے۔ انہیں یہ دیکھ کر حیرت ہوئی کہ قبروں پر گھوڑوں کو باندھا گیا ہے اور ہر قبر پر گھوڑوں کی غلاظت سے گندگی اور صفائی کا کوئی انتظام نہیں۔ قبرستان کی حصار بندی کیلئے تعمیر کی گئی دیوار کے ایک حصہ کو منہدم کرتے ہوئے گھوڑوں کیلئے راستہ بنایا گیا تھا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے گھوڑوں کے مالکین کو طلب کرتے ہوئے سخت برہمی کا اظہار کیا اور انہیں وارننگ دی کہ شام تک اگر گھوڑوں کو نہیں ہٹایا گیا تو پولیس میں مقدمہ درج کیا جائے گا۔ صدرنشین اور ان کے اسٹاف نے کئی گھوڑوں کی رسیوں کو کھول کر قبروں کو بے حرمتی سے بچایا۔ بتایا جاتا ہے کہ اونٹ واڑی قبرستان درج اوقاف ہے اور گزٹ نمبر 19A مورخہ 9 مئی 1985 ء کو سیریل نمبر 188 کے تحت درج کیا گیا ۔ اس قبرستان کے تحت 3300 مربع گز اراضی ہے اور قبرستان کا متولی وقف بورڈ ہے۔ انتظامی کمیٹی کی عدم موجودگی کا فیصلہ اٹھاتے ہوئے کئی برسوں سے گھوڑوں کو باندھا جارہا تھا ۔ محمد سلیم نے قبرستان کی حصار بندی کیلئے فوری طور پر ایک لاکھ روپئے منظور کئے اور انسپکٹر آڈیٹر کو ہدایت دی کہ تعمیری کام جنگی خطوط پر انجام دیتے ہوئے گیٹ کو مقفل کردیں اور اس کی چابی وقف بورڈ میں محفوظ کردی جائے ۔ اگر دوبارہ گھوڑوں کو باندھنے کی کوشش کی گئی تو بورڈ کی جانب سے پولیس میں مقدمہ درج کیا جائے گا ۔ صدرنشین وقف بورڈ کی بروقت مداخلت اور کارروائی سے شہر کے ایک بڑے قبرستان کا تحفظ کیا جاسکا اور قبروں کی توہین کو روکنے میں مدد ملی ۔ انہوں نے اسٹاف کو ہدایت دی کہ وہ قبرستان کی صفائی کریں تاکہ غلاظت اور گندگی باقی نہ رہے۔ بعد میں میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ قبرستانوں کی بے حرمتی کو برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ شہر کے کسی بھی علاقہ میں اگر اس طرح کی شکایات موصول ہوں گی تو وقف بورڈ فوری کارروائی کرے گا ۔ انہوں نے کہا کہ جانوروں کے تحفظ کے قانون کے تحت بھی علحدہ مقدمہ درج کیا جاسکتا ہے۔ قبرستان کے تحفظ کی کارروائی کے بعد صدرنشین وقف بورڈ نے چیف اگزیکیٹیو آفیسر کو ہدایت دی کہ مستقل نگرانی کیلئے بعض عہدیداروں کو متعین کیا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT