Wednesday , October 17 2018
Home / شہر کی خبریں / اوورسیز اسکالر شپ اسکیم، امیدواروں کی فہرست تیار

اوورسیز اسکالر شپ اسکیم، امیدواروں کی فہرست تیار

حیدرآباد۔/9ڈسمبر، ( سیاست نیوز) محکمہ اقلیتی بہبود نے اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کے تحت اقلیتی امیدواروں کی فہرست اُن کے نشانات کے فیصد کے اعتبار سے تیار کرلی ہے اور توقع ہے کہ منگل 12 ڈسمبر کو اسٹیٹ لیول سلیکشن کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوگا جس میں اہل امیدواروں کی فہرست منظور کرلی جائے گی۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے بتایا کہ 332 امیدواروں کو اسکیم کیلئے اہل قرار دیتے ہوئے انہوں نے فہرست تیار کی ہے۔ اسٹیٹ لیول کمیٹی تمام شرائط و قواعد اور نشانات کے فیصد کا جائزہ لیتے ہوئے امیدواروں کے ناموں کو منظوری دے گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سے 25 کروڑ روپئے کی اجرائی کی درخواست کی گئی ہے تاکہ تمام امیدواروں کو اسکالر شپ کی پہلی قسط جاری کی جائے۔ چوتھے مرحلہ کے منتخب امیدواروں کو اسکالر شپ کے طور پر 20 لاکھ روپئے جاری کئے جائیں گے اور پہلی قسط کے طور پر 10 لاکھ روپئے کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ جاریہ سال بجٹ میں حکومت نے 40 کروڑ روپئے اس اسکیم کیلئے مختص کئے تھے لیکن ابھی تک مکمل بجٹ جاری نہیں کیا گیا۔ جاریہ سال کے بجٹ سے 28 کروڑ کی اجرائی باقی ہے اور انہوں نے مزید 25 کروڑ روپئے جاری کرنے کی سفارش کی ہے تاکہ اسکیم پر کامیابی سے عمل کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ تیسرے مرحلہ میں منتخب کئے گئے امیدواروں کو 18کروڑ روپئے کی اجرائی ابھی باقی ہے۔ اس مرحلہ میں 140 امیدواروں کا انتخاب کیا گیا تھا جنہیں7.44کروڑ روپئے جاری کردیئے گئے۔انہوں نے کہا کہ تیسرے مرحلہ کے 18 کروڑ اور چوتھے مرحلہ کے منتخب امیدواروں کو پہلی قسط کی اجرائی کیلئے مزید 25 کروڑ روپئے درکار ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ لیول سلیکشن کمیٹی کی میٹنگ کے بعد منتخب امیدواروں کی فہرست جاری کردی جائے گی اور حکومت کی جانب سے جاری کردہ بجٹ کے اعتبار سے امیدواروں کو پہلی قسط کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ عمر جلیل نے کہا کہ چیف منسٹر کی ہدایت کے مطابق وہ زیادہ سے زیادہ مستحق طلبہ کو اسکیم کے تحت منتخب کرنے کا فیصلہ کرچکے ہیں۔ واضح رہے کہ اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کے پہلے مرحلہ میں 226 اور دوسرے مرحلہ میں 226 اقلیتی امیدواروں کو منتخب کیا گیا تھا۔ پہلے مرحلہ کے امیدواروں میں 23 کروڑ اور دوسرے مرحلہ کے امیدواروں میں 22 کروڑ 68 لاکھ روپئے جاری کئے گئے تھے۔ ابتدائی دونوں مراحل میں اسکالر شپ کی رقم 10 لاکھ روپئے تھی لیکن چیف منسٹر نے اسکیم کی رقم میں اضافہ کردیا ہے جس سے طلبہ کو کافی فائدہ ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر نے اعلیٰ تعلیم کے حصول کیلئے ممالک کی فہرست میں اضافہ سے اتفاق کیا ہے۔ اس سلسلہ میں احکامات کی اجرائی باقی ہے۔ اوورسیز اسکالر شپ کے سلسلہ میں امیدواروں کے والدین کی آمدنی کی حد کو 3 سے بڑھا کر 5 لاکھ کیا گیا اور احکامات کی اجرائی عمل میں آئی ہے۔ عمر جلیل نے بتایا کہ چیف منسٹر نے دینی مدارس کے طلبہ کو بھی اس اسکیم کے دائرہ میں شامل کرنے کا تیقن دیا ہے اور اس اسکیم کی تیاری ابھی جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT