اوپنین پول کی نشریات اور اشاعت پر انتباہ

نئی دہلی ۔ 16 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) الیکشن کمیشن نے میڈیا کو انتباہ دیا ہیکہ وہ 12 مئی کو لوک سبھا انتخابات کی تکمیل تک کسی بھی قسم کا اوپنین پول نشر یا شائع نہ کریں۔ ایک اعلامیہ میں الیکشن کمیشن نے 14 اپریل کو ایک ٹی وی چینل کی جانب سے براڈ کاسٹ کردہ اوپنین پول کا حوالہ دیا اور کہا کہ اس اوپنین پول میں 111 لوک سبھا حلقوں کے نتائج کو بھی شام

نئی دہلی ۔ 16 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) الیکشن کمیشن نے میڈیا کو انتباہ دیا ہیکہ وہ 12 مئی کو لوک سبھا انتخابات کی تکمیل تک کسی بھی قسم کا اوپنین پول نشر یا شائع نہ کریں۔ ایک اعلامیہ میں الیکشن کمیشن نے 14 اپریل کو ایک ٹی وی چینل کی جانب سے براڈ کاسٹ کردہ اوپنین پول کا حوالہ دیا اور کہا کہ اس اوپنین پول میں 111 لوک سبھا حلقوں کے نتائج کو بھی شامل کیا گیا تھا۔ اس طرح کی حرکت سے متعلقہ حلقوں میں اگزٹ پول کے نتائج منفی طور پر اثر انداز ہوسکتے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے اپنے بیان میں کسی بھی چینل کا نام نہیں لیا البتہ یہ اوپنین پول این ڈی ٹی وی کی جانب سے نشر کیا گیا تھا۔ اس خصوص میں الیکشن کمیشن کا کہنا ہیکہ عوامی نمائندگان قانون کے دفعہ 126A کے تحت سنگین خلاف ورزی کی جائے گی ہے جس میں اگزٹ پول کی اشاعت اور نشریات پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

انتخابات کی تاریخ کا اعلان کرنے کے پہلے دن سے ہی تمام کیلئے لازمی ہوجاتا ہیکہ وہ مقررہ دنوں کے درمیان کوئی اوپنین پول جاری نہ کریں۔ تمام ریاستوں میں انتخابی مہم ختم ہونے کے ایک گھنٹے کے بعد تک یہ قانون نافذ رہے گا۔ آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کو یقینی بنانے کیلئے الیکشن کمیشن سخت اقدامات کررہا ہے۔ کمیشن نے تمام پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کو مشورہ دیا ہیکہ وہ مذکورہ بالا اوپنین پول کی طرح کسی بھی قسم کے نتائج اور سروے کو جاری نہ کریں جبکہ یہ دعویٰ کیا جارہا ہیکہ صرف اوپنین پول ہی نہیں بلکہ اگزٹ پول پر بھی پابندی ہے۔ اس ماہ کے اوائل میں بھی الیکشن کمیشن نے 7 اپریل سے 12 مئی تک کسی بھی نوعیت کے اگزٹ پول پر پابندی عائد کی تھی۔ اگزٹ پول 7 اپریل کی صبح 7 بجے سے 12 مئی کی شام 6 بجکر 30 منٹ تک نشر نہیں کئے جاسکتے ہیں۔ لوک سبھا کے 9 مرحلوں میں انتخابات کے بعد آخری مرحلہ تک کوئی اوپنین پول جاری نہیں کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT